پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی ترجمان ثمرہارون بلور نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے روزاول سے تعلیمی اداروں کو تباہ کرنے کی ٹھان لی ہے۔پشاور یونیورسٹی اور اسلامیہ کالج یونیورسٹی جیسی تاریخی درسگاہوں کو مالی مشکلات کا سامنا ہے۔

فیڈریشن آف آل پاکستان یونیورسٹیز اکیڈیمک سٹاف ایسوسی ایشن (فپواسا) کے زیراہتمام پشاور میں منعقدہ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے اے این پی کی صوبائی ترجمان کا کہنا تھا کہ صوبائی صدر ایمل ولی خان کی ہدایت پر انہوں نے اس مظاہرے میں شرکت کی۔ سلیکٹڈ اور نااہل حکومت کے دور میں اسلامیہ کالج یونیورسٹی کے پاس مئی 2021ء کی تنخواہیں اور پنشن دینے کیلئے پیسے تک نہیں، حکومت سورہی ہے۔ہمارے تاریخی درسگاہوں کو ایک سازش کے تحت تباہی کی طرف لے جایا جارہا ہے۔بے جا سیاسی مداخلت، من مانیوں، اپنی مرضی کے قوانین کے نفاذ نے تعلیمی نظام کا بیڑا غرق کردیا ہے۔

انہوں نے شرکاء کو یقین دلایا کہ اے این پی اس تعلیمی دہشتگردی کے خلاف ہر میدان میں کھڑی رہے گی اور ہر فورم پر آواز اٹھائے گی۔اس حکومت میں اساتذہ،سرکاری ملازمین، ڈاکٹرز، پیرامیڈیکل سٹاف، نرسز غرض ہر شعبہ احتجاج پر ہے۔اے این پی فپواسا کے مطالبات کے ساتھ کھڑی ہے اور اسمبلی کے فلور پر انکے لئے آواز اٹھائیں گے۔