پیر24جنوری 2011ء
پشاور ( پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کے زیراہتمام شانگلہ کے ضمنی انتخابات کے لئے
انتخابی مہم زور و شور سے جاری ہے اور گزشتہ روز شانگلہ میں مختلف مقامات پر پانچ
جلسے منعقد کئے گئے ۔ داموڑی میں مسلم لیگ ن کی مقامی قیادت نے اے این پی اور پیپلز
پارٹی کے مشترکہ امیدوار محمد یار خان کی حمایت کا اعلان کردیا ہے۔ انتخابی جلسوں
سے اے این پی کے مرکزی رہنما محمداعظم خان ہوتی ‘ ایم پی اے شیرشاہ خان ‘ اے این پی
ضلع شانگلہ کے صدر حاجی سید فرین خان اور پاکستان پیپلز پارٹی کے کوآرڈینیٹر برائے
ملاکنڈ ڈویژن ڈاکٹر افسر الملک نے خطا ب کیا ۔

اس موقع پر اے این پی کے صوبائی نائب صدر محمد کریم
بابک ، صوبائی سیکرٹری اطلاعات ارباب محمد طاہر خان خلیل ، ڈیڈک سوات کے چیئر مین
سید جعفر شاہ خان اورسابق ناظم یونین کونسل لیلونئی محمد اعظم خان بھی موجود تھے۔ 
اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ اے این پی اور پی پی پی کا اتحاد
اصولوں پر مبنی ہے اور اس کا مقصد اقتدار کا حصول نہیں بلکہ جمہوریت کا استحکام اور
آمریت کا خاتمہ ہے ‘ اے این پی اور پی پی پی کا اتحاد ملک سے 63برسوں کے مسائل اور
مشکلات کے خاتمے کےلئے قائم ہوا ہے اور اتحادی حکومت نے عوام کے مسائل اور مشکلات
کو کافی حد تک کم کردیا ہے ۔

جلسوں سے اپنے خطاب میں اے این پی کے مرکزی رہنما اعظم
خان ہوتی اوایم پی اے شیر شاہ خان نے کہا کہ اے این پی نے اپنے مختصر دور میں وہ
کارنامے انجام دیئے ہیں جوسابق حکومتیں گزشتہ 63برسوں میں بھی نہیں کرسکی ہیں ۔
انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ میں تمام سیاسی جماعتوں کے اتفاق رائے سے اٹھارویں ترمیم
کی منظوری ، صوبائی خودمختاری کا حصول ، صوبے کے عوام کو ان کی شناخت دلانا ،
کنکرنٹ لسٹ کاخاتمہ اور بجلی کے خالص منافع کی رقم کی واگزاری اے این پی کے وہ
کارنامے ہیں جو تاریخ میں سنہرے حروف سے لکھے جائیں گے۔  انہوں نے کہا کہ
29جنوری کا سورج اتحادی جماعتوں کی فتح اور آمریت کی پروردہ قوتوں کی شکست کا دن
ہوگا اور شانگلہ کے غیور عوام اے این پی اور پی پی پی کے مشترکہ امیدوار محمد یار
خان کو بھاری اکثریت سے کامیاب کرائیں گے ۔  انہوں نے کہا کہ حکومت عوام کی
فلاح وبہبود کے لئے تمام تر دستیاب وسائل بروئے کار لا رہی ہے اور مستقبل میں ایسے
منصوبے شروع کئے جائیں گے جن سے صوبے کے ساتھ ساتھ عوام کی تقدیر بھی بدل جائے گی ‘
اے این پی ہزاروں شہداءکے خون کے وارث سیاسی جماعت ہے اور اس نے ملاکنڈ اور سوات
میں قیام امن کےلئے بے پناہ قربانیاں دی ہیں ‘ انہوں نے شانگلہ کے عوام سے اپیل کی
کہ 29جنوری کو محمد یار خان کو بھاری اکثریت سے کامیا ب کراکے آمریت کی پروردہ
قوتوں کو مستر د کردیں

جاری کردہ

میڈیا سیل باچا خان ؒ مرکز