پریس ریلیز۔پشاور30جون2011ء
عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدراسفند یار ولی خان نے یوم صوبائی خود مختاری کے موقع
پر قوم کو مبارکباد دیتے ہوئے اس کامیابی کو ان قربانیوں کا نتیجہ قرار دیا جو باچا
خان،ولی خان اور ان کے ساتھیوں نے دی تھیں۔ مرکزی صدر نے
یاد دلایا کہ ہمارے بزرگوں نے اس وقت صوبائی خود مختاری اور مکمل جمہوریت کے لئے
آواز اٹھائی تھی جب اس طرح کے مطالبے کرنے والوں کو غدار اور ملک دشمن قرار دے کر
جیلوں میں بند کیا جاتا تھا۔آج ہم ان کی ارواح کو مبارکباد دینے میں حق بجانب ہیں۔
مرکزی سیکرٹری اطلاعات سینٹر زاہد خان کی جانب سے جمعرات کے روز جاری ہونے والے
بیان کے مطابق اسفند یار ولی خان نے اٹھارویں آئینی ترمیم
پر عملدرآمد کو ایک تاریخی کامیابی قرار دیتے ہوئے امید ظاہر کی کہ اب جبکہ کنکرنٹ
لسٹ ختم ہو چکی ہے مشترکہ مفادات کونسل موثر ہو چکی ہے اور اور تیل اور گیس کے
ذخائر کی ملکیت میں صوبوں کو شریک کیا جا چکا ہے، صوبے نئے
ملنے والے اختیارات اور وسائل کو صحیح طور پر استعمال کریںگے تاکہ عوام کا معیار
زندگی بلند ہو اور پختونخوا ایک ترقیافتہ صوبہ بن سکے۔
اسفندَیارولی خان
نے پختونخوا کے عوام کو خصوصی مبارکباد کا مستحق ٹھہراتے
ہوئے اس بات کی نشاندہی کی کہ صوبے کے عوام کو نہ صرف خود مختاری ملی ہے بلکہ وہ
اپنے نام اور اپنی شناخت کے مالک بھی بن گئے ہیں۔ انہوں نے اس یقین کا اظہار کیاکہ
صوبائی خود مختاری کے حصول کے نتیجے میں ملک اور جمہوریت مضبوط ہوں گے۔ اب مرکز اور
صوبوں کے درمیان محاذ آرائی کا دور ختم ہو گیا ہے اور ملکی اتحاد اور ترقی کا دور
شروع ہو رہا ہے اب ناخواندگی،غربت اور بے روزگاری کے خاتمے کا وقت آ گیا ہے۔ عوامی
نیشنل پارٹی اب پوری توجہ صوبے اور ملک میں امن و امان کے قیام پر مرکوز کرے گی۔