پریس ریلیز
پشاور 12 جولائی 2011ء بروز منگل
عوامی نیشنل پارٹی ( اے این پی) کے سربراہ اسفندیارولی خان اور اے این پی خیبر
پختونخوا کے صدر سینیٹر افراسیاب خٹک نے قندھار کی ولایتی شوریٰ کے سربراہ اور
افغان صدر حامد کرزئی کے چھوٹے بھائی احمد ولی کرزئی کی المناک موت کو ایک سانحہ
قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ اس واقعے سے قندھار کے عوام بالخصوص اور افغانستان کے
عوام بالعموم ایک اچھے اور زیرک سیاست دان سے محروم ہوگئے ہیں ، مرکزی میڈیا سیل
باچاخانؒ مرکز پشاور سے جاری کئے گئے ایک بیان میں دونوں رہنماو ¿ں نے افغان صدر
حامد کرزئی سے واقعے پر دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم احمد ولی کرزئی
نے مختصر عرصے میں قندھار میں بحالی ، تعمیر نو اور قیام امن کے لئے مثالی کام کیا
اور انہوں نے معاشرے کے ہر طبقے کی بلا امتیاز خدمت کی ، انہوں نے کہا کہ مرحوم
احمد ولی کرزئی نے قندھار میں بالخصوص عوامی سیاست کو فروغ دیا اور انہوں نے خدمت
کو اپنا شعار بنائے رکھا ، ہر کسی سے بلاتفریق ملاقات اور ان کے مسائل سے آگاہی
حاصل کرنا ان کی مقبولیت اور محبوبیت کا سب سے بڑا سبب تھا ، انہوں نے مرحوم کی
بلندی ¿ درجات کی دعا کرتے ہوئے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کیا اور کہا کہ
افغانستان کے لئے ان کی خدمات یاد رکھی جائیں گی۔

جاری کردہ
مرکزی میڈیا سیل
باچا خان مرکز پشاور