مورخہ 20 دسمبر 2009
پریس ریلیز

پشاور ،عوامی نیشنل پارٹی کا ایک خصوصی اجلاس وزیر اعلیٰ این ایکسی میں اے این پی
کے صوبائی صدر سینیٹر افراسیاب خٹک منعقد ہوا۔ اجلاس میں ضلع سوات میں تعمیر نو کے
کام کا جائزہ لیا گیا اور سوات ڈاکٹر شمشیر علی خان کے شہادت کی وجہ سے PF-83 سوات
IV کے خالی نشست پر ضمنی الیکشن کےلئے لائحہ عمل ترتیب دیا گیا۔ اجلاس میں اے این
پی کے صوبائی سیکرٹری جنرل تاج الدین خان‘ صوبائی سیکرٹری اطلاعات ارباب محمد طاہر‘
صوبائی وزیر ایوب اشاڑی‘ ارکان اسمبلی شیر شاہ خان‘ جعفر شاہ خان‘ وقار خان‘ ضلع
سوات کے صدر محمد درویش خان‘ خواجہ خان اور بابو خان نے شرکت کی۔ سوات میں ضمنی
الیکشن کے حوالے سے اجلاس کے شرکاءنے اپنے اپنے تجاویز پیش کئے اور اس اُمید کا
اظہار کیا گیا کہ ملاکنڈ میں دہشت گردی کے خاتمے کے بعد یہاں کے عوام کا پارٹی پر
اعتماد میں اضافہ ہوا ہے اور پارٹی کا گراف روز بروز بلند ہورہا ہے۔ اجلاس میں سوات
میں ترقیاتی کام مزید تیز کرنے‘ لوگوں کے مسائل ان کی دہلیز پر حل کرنے‘ عوام کو
ترقیاتی عمل میں شریک کرنے اور امن و امان کی صورتحال کو مزید بہتر بنانے کےلئے کئی
اہم فیصلے کئے گئے۔
اجلاس سے این پی کے صوبائی صدر افراسیاب خٹک نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف دہشت
گرد ہیں اور دوسری طرف اے این پی عوام کے ساتھ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کھڑی ہے۔
دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اے این پی کے سینکڑوں کارکنوں اور ڈاکٹر شمشیر علی خان
شہید جیسے نڈر اور بے باک رہنماﺅں نے جام شہادت نوش کیا اور دہشت گردوں کے شیطانی
عزائم کو تکمیل تک پہنچنے نہیں دیا۔ اُنہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جہاد
اسفندیار ولی خان کی قیادت میں جاری رہے گی۔ ملاکنڈ میں دہشت گردوں کے خلاف اے این
پی کی صوبائی حکومت کی بروقت اور فیصلہ کن اقدامات کی بدولت دہشت گردوں کا خاتمہ
اور منتخب حکومت کی رٹ بحال ہو چکی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ ہماری ریجن میں امن اور
ترقی کےلئے ضروری ہے کہ دہشت گرد جہاں بھی ہو ان کا خاتمہ کیا جائے جس کےلئے
پاکستان کو امن دوست قوتوں کے ساتھ مل کر مو ¿ثر اقدامات کرنے ہوں گے۔
اُنہوں نے کہا کہ اے این پی جمہوریت اور جمہوری اداروں کے استحکام پر یقین رکھتی ہے
اور جمہوریت میں ہی عوام کے مسائل کا حل موجود ہے اور یہ جمہوریت کا ثمر ہے کہ 19
سال بعد NFC کا متفقہ ایوارڈ عمل میں لایا گیا جس میں صوبوں کا حصہ بڑھایا گیا جس
سے صوبوں کے احساس محرومی کا خاتمہ ہو جائےگا جو ایک بڑی کامیابی ہے اور آنےوالے
دنوں میں تمام سیاسی جماعتوں پر مشتمل آئینی پیکیج کی شکل میں صوبوں اور قومیتوں کی
بنیاد پر مسائل کے حل کا ایک عملی مسودہ پارلیمنٹ میں پیش کیا جائےگا۔
جاری کردہ

ارباب محمد طاہر خان خلیل
صوبائی سیکرٹری اطلاعات اے این پی‘ پختون خوا