منگل 9 اگست 2011ء
پشاور (پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر سینیٹر افراسیاب خٹک نے کہا ہے کہ
قبائلی علاقوں میں پولیٹیکل پارٹیز ایکٹ کا نفاذ اور قبائل کو صوبائی اسمبلی میں
نمائندگی دینا وقت کا اہم تقاضہ ہے‘ قبائلی عوام کو ایک سازش کے تحت تنہا ءکر نے کی
کوشش کی جارہی ہے ‘ وہ اپنی زیر صدارت قبائلی علاقوں کی پارٹی تنظیموں کے اجلاس سے
خطاب کر رہے تھے ‘ اس موقع پر اے این پی کے صوبائی نائب صدر و فاٹا امور کے انچارج
لطیف آفریدی ایڈووکیٹ اور پارٹی کے صوبائی ترجمان و سیکرٹری اطلاعات ارباب محمد
طاہر خان خلیل بھی موجود تھے ‘ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اے این پی خیبر پختونخوا کے
صدر سینیٹر افراسیاب خٹک نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ قبائلی عوام کو قومی دھارے
میں شامل کرنے کےلئے قبائلی علاقوں کو صوبے کا حصہ بنایا جائے تاکہ وہاں پر دہشت
گردی اور انتہاپسندی کے خلاف مربوط کام ہوسکے اور صوبے سمیت پورے ملک اور خطے میں
امن کا خواب شرمندہ تعبیر ہوسکے ‘انہوں نے کہا کہ اب تمام سیاسی قوتوں کو مل کر
قبائلی عوام کو مشکلات سے نکالنے کےلئے جدوجہد کرنا ہوگی ‘ بلوچستان کے عوام کےلئے
جنوبی پختونخواصوبہ قائم کیا جائے جس کےلئے پہلے پارٹی کے اندر مشاورت کی جائے گی ‘
تمام پختون ایک قوم ہے اور جغرافیائی بندشوں کی آڑ میں ہمیں ایک دوسرے سے الگ نہیں
کیا جاسکتا ‘انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں میں دہشت گردی کے خاتمہ کےلئے ریاست کو
اپنی ذمہ داریاں ادا کرنا ہونگی اور قبائلی علاقوں کی ترقی کےلئے سینیٹرز فنڈز سے
کام ہونا چاہیے‘ اجلاس میں قبائلی علاقوں کے تنظیمی امور اور مختلف قبائلی علاقوں
کی صورتحال پر بھی تفصیلی تبادلہ خیا ل کیا گیا۔

جاری کردہ
مرکزی میڈیا سیل
باچاخانؒ مرکز پشاور