مورخہ 20 اگست 2010ءبروز جمعتہ المبارک

 پریس ریلیز

پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی ضلع پشاور اور سٹی ڈسٹرکٹ کے زیر اہتمام اے این پی صوبہ سندھ کے رہنما عبید اللہ خان یوسف زئی کی غائبانہ نماز جنازہ باچا خان مرکز پشاور میں ادا کی گئی۔ اس سے قبل باچا خان مرکز میں ایک تعزیتی اجلاس زیر صدارت صوبائی جنرل سیکرٹری اے این پی تاج الدین خان منعقد ہوا۔ جس میں صوبائی
وزراء، ایم پی ایز اور صوبائی عہدیداروں نے بھی شرکت کی اور کل کے واقعہ پر شدید غم و غصہ کا اظہار کیا گیا۔ حکومت سندھ اور حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر کراچی میں پختونوں کی ٹارگٹ کلنگ بند کی جائے۔

عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری نے تعزیتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج وقت کا تقاضا ہے کہ تمام پختون اپنے تمام سیاسی اختلافات اور نظریات کو بالائے طاق رکھ کر پختونوں کی بقاءکےلئے متحدہو جائے۔ اُنہوں نے کہا کہ اگر پختون متحد نہ ہوئے تو انتہا پسند اور دہشت گرد قوتیں پختونوں کو صفحہ ہستی سے مٹا دیں گے۔ لہٰذا ہمیں بہرصورت متحد ہونا پڑے گا جیسا کہ باچا خان نے فرمایا ہے کہ اگر ہم متحد نہ ہوئے تو ہم مٹ جائیں گے۔ اُنہوں نے کہا کہ پختونوں کے گریبان سے ہاتھ نکال دیا جائے وہ امن پسند قوم ہے اور کسی قسم کی تشدد اور دہشت گردی کے حق میں نہیں ہے لیکن پرامن زندگی گزارنے پر یقین رکھتی ہے۔

اجلاس سے صوبائی وزیر لائیو سٹاک حاجی ہدایت اللہ خان، صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری مختیار علی خان ایم پی اے،  شگفتہ ملک ایم پی اے، رضاءاللہ خان ایڈووکیٹ ڈسٹرکٹ بار صدر ضلع پشاور، ضلع پشاور کے صدر میاں مشتاق احمد اور سٹی ڈسٹرکٹ پشاور کے صدر ملک غلام مصطفی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اے این پی صوبہ سندھ کے رہنما عبید اللہ یوسف زئی کے ٹارگٹ کلنگ کی بھرپور مذمت کرتے ہیں اور حکومت سندھ سے مطالبہ کیا کہ اس واقعے کی جوڈیشل انکوائری کی جائے۔ اُنہوں نے کہا کہ ہم نے بار بار مطالبہ کیا کہ کراچی کو اسلحہ سے پاک کیا جائے اور اگر ایسا کیا ہوتا تو آج ہمیں یہ دن نہ دیکھنا پڑتا۔ اُنہوں نے کہا کہ اگر ٹارگٹ کلنگ کا یہ سلسلہ جاری رہا تو حالات کنٹرول سے باہر ہو جائینگے جس کی تمام تر ذمہ داری سندھ کی صوبائی حکومت پر عائد ہو گی۔ اُنہوں نے کہا کہ کراچی کی تعمیر، ترقی اور رونق میں پختونوں کا خون پسینہ شامل ہیں۔ اب ہم کراچی کو اپنی آنکھوں کے سامنے برباد ہوتے نہیں دیکھ سکتے۔ اُنہوں نے کہا کہ ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت پختون قوم کی نسل کشی کی جا رہی ہے۔ پختونوں کے خلاف ان سازشوں کو ناکام بنانے کےلئے تمام پختون قوم کو متحد ہونا پڑے گا ورنہ بعد میں ہمیں پچتانا پڑےگا۔

آخر میں ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن پشاور کے صدر رضاءاللہ ایڈووکیٹ نے مندرجہ ذیل قراردادیں پیش کئے۔

 1) کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کی جودیشل انکوائری کی جائے۔

 2) چیف جسٹس آف پاکستان سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ گزشتہ دو سالوں سے کراچی میں درپیش کلنگ کا سوموٹو ایکشن لیں۔

 3) کراچی میں پولیس اور رینجرز پختونوں کے قتل عام بند کرنے میں ناکام رہے ہیں اس لئے کراچی کو فوج کے حوالہ کیا جائے۔

 4) عوامی نیشنل پارٹی نے صوبہ سندھ میں رہائشی پختونوں کی
جرات و بہادری کو سلام پیش کیا اور اُنکو یقین دلایا کہ خیبر پختون خوا کے سارے پختون اُنکے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہونگے۔

جاری کردہ

 ارباب محمد طاہر خان خلیل
صوبائی سیکرٹری اطلاعات اے این پی، خیبر پختون خوا