جمعرات 18اگست 2011ء
پشاور (پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی الیکشن کمیشن کا ایک خصوصی اجلاس زیر صدارت
قائم مقام چیئر مین لطیف آفریدی ایڈووکیٹ منعقد ہوا جس میں مرکزی الیکشن کمیشن کے
ارکان محمد عارف اظہر (پنجاب )‘ نظام الدین کاکڑ (بلوچستان )‘رانا گل آفریدی (سندھ
)‘ مرکزی الیکشن کمیشن کے آفس انچارج رسول خان سالار ‘ صوبائی الیکشن کمیشن کے چیئر
مین باز محمد خان ‘ سیکرٹری تاج الدین خان اور ارکان میں حسین شاہ یوسفزئی ‘ عمران
آفریدی اور مسرت شفیع ایڈووکیٹ نے شرکت کی ‘ اس موقع پر ان اضلاع کے ارکان بھی
موجود تھے جنہوں نے الیکشن کمیشن میں اپنی اپیلیں جمع کروائی تھیں ‘ مرکزی الیکشن
کمیشن نے ایک ایک ضلع کی اپیل سنی اور ان اپیلوں پر صوبائی الیکشن کمیشن کے مو ¿ قف
سے بھی آگاہی حا صل کی اور اس کے بعد ان اپیلوں پر اپنے فیصلے سنائے اور اس سے
صوبائی ا لیکشن کمیشن کو آگاہ کیا ‘ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی الیکشن کمیشن کے
قائم مقام چیئرمین لطیف آفریدی ایڈووکیٹ نے کہا کہ ریکارڈ تعدا د میں لوگوں کی
رکنیت سازی مہم میں شرکت سے یہ بات ثابت ہو گئی ہے کہ عوام کو اے این پی کی
پالیسیوں پر مکمل اعتماد ہے کیونکہ عوامی نیشنل پارٹی نے پارلیمینٹ کی خود مختاری ‘
آئین کی بالا دستی اور جمہوریت کے استحکام کے لئے جو اقدامات کئے ہیں ماضی میں ان
کی مثا ل نہیں ملتی ‘ انہوں نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی واحد سیاسی پارٹی ہے جس نے
مختصر وقت میں اپنے انتخابی منشور کو عملی جامہ پہنا کر عوام سے کئے گئے بیشتر وعدے
پورے کردیئے ہیں کیونکہ اے این پی کھوکھلے نعروں کی سیاست پر یقین نہیں رکھتی بلکہ
وہ عملی خدمت کے نظریہ پر عمل پیرا ہے ‘ انہوں نے کارکنوں پر زور دیا کہ وہ گھر گھر
جاکر پارٹی پیغام عوام تک پہنچائیں تاکہ رکنیت سازی کا نیاریکارڈ قائم ہوسکے ۔
جاری کردہ
مرکزی میڈیاسیل
باچا خانؒ مرکز پشاور