پشاور، سابق سینیٹر اور معروف دانشور بشیر مٹہ نے
سینکڑوں ساتھیوں کے ہمراہ عوامی نیشنل پارٹی میں شمولیت کا اعلان کردیا ہے ، اس
سلسلے میں ایک سادہ مگر پروقار تقریب وزیر اعلیٰ ہاﺅس میں عوامی نیشنل پارٹی ضلع
چارسدہ کے صدر خالد خان کی زیر صدارت منعقد ہوئی جس میں عوامی نیشنل پارٹی کے قائد
اسفندیار ولی خان، مرکزی سینئر نائب صدر سینیٹر حاجی محمد عدیل، صوبائی صدر سینیٹر
افراسیاب خٹک، جنرل سیکرٹری ارباب محمد طاہرخان خلیل، صوبائی سیکرٹری اطلاعات ملک
غلام مصطفی، مرکزی ایڈیشنل سیکرٹری جنرل تاج الدین خان، صوبائی نائب صدور میاں
مشتاق، حمید الرحمان محمدزئی، میاں سیدلائق باچا، صوبائی وزراءمیاں افتخار حسین،
ایوب اشاڑے، واجد علی خان اور چارسدہ سے سینکڑوں کی تعداد میں کارکنوں اور بشیر مٹہ
کے ساتھیوں نے شرکت کی ۔

سابق سینیٹر بشیر مٹہ نے اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی
میں ساتھیوں سمیت شمولیت کا باضابطہ اعلان کیا اور کہا کہ اے این پی کے کارناموں
خصوصاً صوبے کی نام کی تبدیلی، صوبائی خودمختاری کے حصول اور متفقہ این ایف سی
ایوارڈ جیسے اقدامات سے متاثر ہوکر اے این پی میں شمولیت کا فیصلہ کیا ہے، انہوں نے
کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی کی سیاست کی مثال ایک سمندرکی طرح ہے اورخطے کی موجودہ
صورتحال میں پختونوں کے نام پر سیاست کرنےو الوں کا فرض ہے کہ خطے میں قیام امن اور
خوشحالی و ترقی کے لئے عوامی نیشنل پارٹی کے سرخ جھنڈے تلے پارٹی قائد اسفندیار ولی
خان کی قیادت میں متحد ہوجائیں۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عوامی نیشنل پارٹی کے
صوبائی صدر سینیٹر افراسیاب خٹک نے بشیر مٹہ کی پارٹی میں شمولیت کو خوش آئند قرار
دیا اور انہیں خوش آمدید کہا، افراسیاب خٹک نے کہا کہ بشیر مٹہ جیسے دانشور اور
ملکی و بین الاقوامی سیاست کا وسیع مطالعہ و مشاہدہ رکھنے والے دانشور کی پارٹی میں
شمولیت موجودہ حالات میں پارٹی کی پالیسیوں پر دانشور طبقے کے اعتماد کا مظہر ہے ،
انہوں نے اس امید کا اظہار بھی کیا کہ بشیر مٹہ پختون قوم کی ترقی و خوشحالی کے لئے
اپنی بھرپور صلاحیتوں کااستعمال کرینگے ۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے عوامی نیشنل پا رٹی کے قائد
اسفندیار ولی خان نے کہا کہ بشیر مٹہ ہمارے پرانے ساتھی ہیں اور ان کی پختون قوم
کےلئے بیش بہا قربانیاں ہیں ، ایک ایسے وقت میں جب پختون قوم کو ان کی ضرورت پڑی تو
انہوں نے فارن آفس کی ملازمت پر پختون قوم کے مفاد کو ترجیح دی اور ملازمت چھوڑ کر
پختون قوم کے حقو ق کےلئے خدائی خدمتگار تحریک کی تسلسل عوامی نیشنل پارٹی میں
شمولیت اختیار کرکے پختون قوم کے حقوق کےلئے جدوجہد کی ، انہوں نے کہا کہ ایک
دانشور کی حیثیت میں موجودہ دور میں ان کی پارٹی میں شمولیت پختونوں کی ترقی کےلئے
اے این پی کی جدوجہد کے اعتراف کے مترادف ہے ، پارٹی کے موجودہ آئین کی تیاری میں
بھی بشیر مٹہ کا اہم کردار رہا ہے ، انہوں نے کہا کہ باچاخانؒ نے سو سال قبل جو
راستہ دکھایا تھا ہم اسی پر گامزن ہیں اور باچاخانؒ اور ولی خان کے ان ارمانوں کو
کافی حد تک پورا کردیا گیا ہے جن کے لئے دونوں عظیم قائدین نے قید و بند اور
جلاوطنی کی صعوبتیں برداشت کیں ، صوبے کے نام کی بحالی اور کالاباغ ڈیم کے پختون
دشمن منصوبے کے خاتمے کے اقدامات سے باچا خانؒ ا ور ولی خان کی روحوں کو بھی سکون
ملا ہوگا،پختون قوم کی ترقی کےلئے جتنے بھی اقدامات موجودہ دور حکومت میں کئے گئے
ہیں ان کی مثال ماضی میں نہیں ملتی اور ان تمام اقدامات کا سہرا موجودہ منتخب
جمہوری حکومت کے سر ہے ،لیکن اب بھی مزید اقدامات کی گنجائش موجود ہے ، انہوں نے
بشیر مٹہ کی عوامی نیشنل پارٹی میں شمولیت پر اظہارمسرت کیا اور بشیر مٹہ کو مرکزی
ورکنگ کمیٹی کی رکنیت کےلئے بھی نامزد کرنے کا۔