Karachi, President of the Awami National Party Asfandyar
Wali Khan will address a ANP public gathering at Jinnah Garden (near the tomb of
Mohammad Ali Jinnah) on Sunday, January 29th (date changed to Feb. 26th). While talking to the mediamen,
Shahi Sayed, president of ANP Sindh chapter further said that the central
president will lay foundation stone of Baacha Khan General Hopital too.

Here is the detailed script of the press release;

کراچی، عوامی نیشنل پارٹی ملک میں مستحکم جمہوریت اور
پارلیمنٹ کی بالادستی پر یقین رکھتی ہے، اس کے لیے ہمارے اکابرین کی سیاست جہد
مسلسل سے عبارت ہے، مرکزی صدر اسفندیار ولی خان کی جانب سے قومی اسمبلی میں پیش
کردہ قرارداد اسلاف کی جدوجہد کا تسلسل ہے، اس قرار داد کی مخالفت کرنے والوں کے
متعلق فیصلہ ہم عوام پر چھوڑتے ہیں۔ آج کی پریس کانفرنس کے توسط سے میں ایک بار پھر
یہ بتاتا چلوں کہ پاکستان کے تمام مسائل کا حل جمہوریت کے تسلسل میں ہے۔  جمہو
ریت کے بغیر ملک کو درپیش مسائل کے حل کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا۔ عوامی نیشنل
پارٹی ملک میں مکمل جمہوری اقدار پر یقین رکھتی ہے  ۔تباہ حال معیشت ، کمزور
جمہوری ادارے، امن و امان کی غیر یقینی صورت حال، خستہ حال قومی ادارے، انتہاء
پسندی کی ذمہ دار ملک میں طویل آمرانہ حکومتیں ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ ملک کو
مشکلات سے نکالنے کے لیے تمام سیاسی جماعتیں ایک دوسرے کا ہاتھ مظبوط کریں۔

عوامی نیشنل پارٹی آج پھر اس بات کا اعادہ کرتی ہے کہ کسی بھی غیر آئینی غیر جمہوری
اقدام کے خلاف بھر پور مخالفت کرے گی۔ ہم یہ سمجھتے ہیں کہ آئین میں تمام اداروں کی
حدود متعین ہیں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ تمام ادارے اپنی اپنی حدود میں رہیں اور اگر
کوئی بھی ریاستی ادارہ اپنی حدود سے تجاوز کرتا ہے تو عوامی نیشنل پارٹی اس کی بھر
پور مخالفت کرے گی ۔ حدود سے تجاوز ناقابل تصور تباہی لیکر آئے گا جس کا سب سے
زیادہ نقصان عوام کا ہوگا۔ ملک اس وقت کسی بھی قسم کے غیر ذمہ دارانہ رویے کا متحمل
نہیں ہوسکتا ۔عوامی نیشنل پارٹی کی پوری کوشش ہے کہ ملک کے سیاسی درجہ حرارت کو جلد
سے جلد معمول پر لایا جائے۔  اس سلسلے میں مودبانہ گزارش ہے کہ مزاحمت کے
بجائے مفاہمت کا رویہ اختیار کیا جائے تاکہ اداروں کے ٹکراؤ کی فضاء تیار کرنے کی
کوششوں کی حوصلہ شکنی کی جاسکے ۔
ملک کی موجودہ جمہوریت بے پناہ قربانیوں کے بعد بحال ہوئی ہے اس کا دفاع تمام سیاسی
جماعتوں پر فرض ہے اور اس کے لیے کسی بھی قسم کی کوتاہی شہدائے جمہوریت کے خون سے
غداری کے مترادف ہوگا۔ ہم سیاسی بلیک میلنگ کو ایک لعنت سمجھتے ہیں۔ حکومتی اتحادی
بننے کے بعد روز اول سے ہم نے پاکستان پیپلز پارٹی کا بھرپور ساتھ دیا ہے اور مشکل
کی ہر گھڑی میں ہم نے پہلے بھی حکومت کا ساتھ دیا تھا اور آئندہ بھی دیں گے۔

 صوبہ سندھ میں جمہوریت کی فضاء کی مضبوطی کے لیے
ہم نے تمام سیاسی جماعتوں سے رابطوں کو بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ صوبے کی سیاسی
فضاء کو پر امن رکھا جاسکے اور مرکزی قیادت کے فیصلوں کے تناظر میں عوامی نیشنل
پارٹی سندھ میں پاکستان پیپلز پارٹی کا بھر پور ساتھ دے گی
 

رواں ماہ کے شروع ہوتے ہی عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماؤں
اور کارکنان پر حملے شروع ہوئے جس میں پاک کالونی وارڈ کے سینئر نائب صدر فرقان شاہ
کو ٹارگٹ کلنگ میں شہید کیا گیا، ۔ضلع سینٹرل کے ذمہ دار حنیف مندوخیل قاتلانہ حملے
میں زخمی ہوئے اور ضلع ویسٹ کے صدر سیدا حمد خان کو قاتلانہ حملے میں شہید کیا گیا۔
یہ تمام واقعات کارکنان کی تشویش میں اضافے اور اشتعال پیدا کرنے کا سبب بن سکتے
ہیں۔ خاص طور پر شہید امن سید احمد خان کی شہادت ہمارے لیے ناقابل فراموش المیہ ہے
عوامی نیشنل پارٹی یہ مطالبہ کرتی ہے کہ جائے وقوع پر ان کے قاتل کی ہلاکت کے بعد
قتل میں ملوث دیگر ملزمان کو گرفتار کیا جائے ۔ پارٹی رہنماؤں کے تحفظ کے حوالے
ہمیں شدید تحفظات ہیں۔  پارٹی رہنماؤں کے سیکیورٹی کے حوالے سے کیے گئے
اقدامات صرف بیانات تک محدود ہیں او ر صوبائی وزیر داخلہ اور خاص طور وفاقی وزیر
داخلہ کی جانب سے ابھی تک کسی بھی قسم کے اقدامات نہیں کیے گئے ہیں اور پارٹی
رہنماؤں کی سیکیورٹی کے حوالے سے تحفظات اور تشویش سے پارٹی کی مرکزی قیادت کو آگاہ
کردیا گیا ہے۔
سفیر انسانیت رئیس الاحرار اور فخر افغان خان عبدالغفار خان المعروف باچا خان کی 24
ویں اور قائدجمہوریت خان عبدالولی خان کی چھٹی برسی کوعوامی نیشنل پارٹی سندھ بھر
پور عقیدت و احترام سے منائے گی۔ کراچی سمیت سندھ بھر میں یونٹ، وارڈ، پی ایس اور
ضلعی کی سطح پر قر آن خوانی کا اہتمام کیا جائے گا۔ جس کے بعد باچا خان مرکز میں قر
آن خوانی کی جائے گی اور مورخہ 29 جنوری بروز اتوار دوپہر 2 بجے مزار قائد سے متصل
باغ جناح پر عظیم الشان جلسہ عام منعقد کیا جائے گاجس میں پارٹی کے مرکزی صدر اسفند
یار ولی خان بھی شرکت کریں گے اور جلسہ عام کی تیاریوں کے حوالے سے مختلف کمیٹیاں
تشکیل دیدی گئی ہیں۔  جو کہ کل صوبائی تنظیم کے اجلاس کے بعد ہی متحرک ہوچکی
ہیں اور مرکزی صدر اسفندیار ولی خان اپنے دورہ سندھ میں دیگر مصروفیات کے علاوہ
باچا خان جنرل اسپتال کا سنگ بنیاد رکھیں گے ۔ آج کی اس پریس کے توسط میں تمام
جمہوریت پسند ترقی پسند،اور امن پسند عوام سے 29 جنوری کو ہونے والے جلسہ عام میں
بھر پور شرکت کی اپیل کی جاتی ہے ۔