پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ قبل ازوقت انتخابات بارے بیان سوچھی سمجھی سازش کے تحت جاری کیا گیا ہے تاکہ سلیکٹڈ وزیر اعظم کو من پسند اکثریت دلوا کر قوم پر مسلط کیا جا سکے، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت بیساکھیوں کے سہارے کھڑی ہے جس پر عمران خان کے تحفظات موجود ہیں اور اب وہ قبل ازوقت الیکشن میں ریکارڈ دھاندلی کے ذریعے بھاری اکثریت سے اقتدار پر قبضہ چاہتے ہیں،انہوں نے کہا کہ یہ بیان کپتان کو اقتدار دلوانے والوں کی مرضی سے کرایا گیا ہے،ایمل ولی خان نے کہا کہ ملک میں مصنوعی مہنگائی اور روپے کی قدر میں کمی کا ڈرامہ قوم کو یہ باور کرانے کی کوشش ہے کہ پچھلی حکومتوں میں حکمرانوں نے صرف لوٹ مار اور کرپشن کی ہے،انہوں نے کہا کہ ملک میں نہ معاشی بحران ہے اور نہ ہی معیشت اتنی کمزور پڑ گئی ہے کہ لوگوں کا جینا مشکل ہوگیا ہے بلکہ سیاستدانوں کو بدنام کرنے کیلئے ڈرامہ کیا جا رہا ہے اور اس کا اعتراف وزیر خزانہ گزشتہ روزاپنے انٹرویو میں کرچکے ہیں ، انہوں نے مزید کہا کہ اسد عمر اپنی ذاتی خواہش پر ٹیکسسز میں اضافہ اور روپے کی قدر میں کمی کا اعتراف کر چکے ہیں،ایمل ولی خان کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان کو قوم پر مسلط کرنے والوں کو کپتان کی جانب سے صاف صاف پیغام پہنچا دیا گیا کہ وہ اس مینڈیٹ کے ساتھ اٹھارہویں آئینی ترمیم کو چھیڑ سکتا ہے نہ ہی اْن کیلئے بجٹ میں اضافہ کرسکتا ہے لہذا اْن کو بھاری مینڈیٹ دیا جائے جس کیلئے گراونڈ پر کام جاری ہے اور عین ممکن ہے کہ کپتان کو بھاری مینڈیٹ دینے کیلئے وقت سے پہلے انتخابات منعقد کرا دیئے جائیں،ایمل ولی خان نے یہ بھی کہا کہ فی الحال کپتان کے تمام مخالفین کو جیلوں میں ڈالا جارہا ہے جس کے بعد بڑے مارجن کیلئے مڈٹرم انتخابات کا اعلان کیا جائیگا،انہوں نے کہا کہ مقتدر قوتوں کے ایماء پر عمران خان نے اپنی سو روزہ حکومت میں صرف اپنے سیاسی مخالفین کی پگڑیاں اچھالیں اور یہ سلسلہ اْس وقت تک جاری رہے گا جب تک وہی طاقتور حلقے کپتان کو بھاری اکثریت سے کامیاب نہ کرادیں۔ایمل ولی خان نے کہا کہ ملک کے سب سے اہم مسائل دہشتگردی اور کالعدم جماعتوں کی مشکوک سرگرمیوں سے عام عوام کی توجہ ہٹا کر اْن کو کرپشن اور احتساب کا دلفریب نعرہ دیا گیا ہے جو آنے والے وقتوں میں پاکستان کیلئے تباہی کا پیغام لائے گا۔