افغانستان ملالہ پر حملے کے دکھ کو پوری طرح محسوس کررہا ہے ،حملے کے خلاف اٹھنے والی آوازوں کو خاموش نہیں ہونا چاہئے ، اسفندیار ولی خان کے نام خط

پشاور، افغانستان کے صدر حامد کرزئی نے کہا ہے کہ ملالہ یوسف زئی اور ان کی ساتھی طالبات پر حملہ اسلام و انسان دشمن عناصر کی ایک بھیانک سازش ہے جس کا مقصد بچیوں کی تعلیم کا راستہ روکنا اور جہالت کا راج قائم کرنا ہے۔

عوامی نیشنل پارٹی کے صدر اسفندیار ولی خان کے نام ایک خط میں افغان صدر نے کہا ملالہ یوسف زئی پر مذموم حملہ نہ صرف اخلاقی اقدار کی پامالی ہے بلکہ افغان روایات کے بھی خلاف ہے کیونکہ پختون معاشرے میں خواتین پر ہاتھ اٹھانے کی کوئی گنجائش نہیں ، اس حملے سے امر کی بھی تصدیق ہوگئی ہے کہ دونوں اطراف کے لوگوں کو ایک نہایت خطرناک دشمن کا سامنا ہے کیونکہ افغانستان میں بھی شرپسند عناصر بچیوں کے سکولوں کو نشانہ بناتے ہیں اور ان کی تعلیم میں رخنہ ڈالتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ اس حملے کے خلاف پوری دنیا اور خصوصاً پاکستان اور افغانستان میں جو آوازیں اٹھیں انہیں ایک مستقل حیثیت دینے کی ضرورت ہے اور ان آوازوں کو خاموش نہیں ہونا چاہئے ۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ جہالت کے آلۂ کاروں اور تاریکی کے علمبرداروں کے خلاف فوری اور عملی اقدامات ہونے چاہئیں ۔