حکومت میں آ کر بے روزگاری کے خاتمے کیلئے ہر حد تک جائیں گے، امیر حیدر خان ہوتی

کپتان نے اپنی جماعت کے نظریاتی کارکنوں کی پیٹھ میں چھرا گھونپ کر ٹکٹ لوٹوں کو جاری کر دیئے ۔

سابق حکومت نے سرکاری خزانے کو بے دردی سے لوٹا ،اے این پی عوام کی محرومیوں کا ازالہ کرے گی۔

مرکز کے پاس باقی رہ جانے والے صوبے کے حقوق حاصل کر کے ترقی کے سفر کا آغاز کریں گے۔

خود روزگار سکیم کی کامیابی کیلئے نوجوانوں کو بلا سود قرضے فراہم کئے جائیں گے۔

شاہراہوں کی تعمیر اور پشاور میٹرو ترقیاتی منصوبوں میں سر فہرست ہونگے۔ نوشہرہ میں جلسہ عام سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ صوبہ معاشی طور پر دیوالیہ ہو چکا ہے اور آج اخبارات میں شائع ہونے والی خبروں سے یہ بات ثابت ہو گئی ہے کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں کیلئے خزانے میں رقم موجود نہیں ہے ،اے این پی طویل عرصہ سے عوام کے علم میں یہ بات لاتی رہی ہے کہ صوبائی حکومت نے خزانہ لوٹ لیا ہے اور سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن کیلئے پیسہ نہیں ہے، کپتان کی پریشانی کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ انہوں نے پی ٹی آئی کے نظریاتی کارکنوں کو نظر انداز کر کے لوٹوں کو ٹکٹ جاری کئے ، فرد واحد کیلئے نہیں بلکہ قوم کی بقاء کیلئے اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کرنے کی ضرورت ہے ، حکومت میں آ کر مرکز کے پاس رہ جانے والے صوبے کے حقوق حاصل کریں گے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے سی کالونی نوشہرہ این اے 25میں انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،، اے این پی کے امیدوار اور ضلعی صدر ملک جمعہ خان نے بھی اس موققع پر خطاب کیا ، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ سابق حکومت کی غیر ذمہ دارانہ اور غیر سنجیدہ پالیسیوں کی وجہ سے صوبہ مالی بحران کا شکار ہوا ، انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعلیٰ نے صوبے کے ساتھ ساتھ اپنے ہی حلقہ کے عوام کی تذلیل کی اور انہیں ان کے جائز حقوق سے محروم رکھا ، انہوں نے کہا کہ پنجاب میں بجلی کے منصوبے اور اورنج ٹرین جیسے منصوبے بن رہے ہیں ،سندھ میں تھرکول اور بلوچستان میں گوادر مکمل ہو رہا ہے جبکہ ہمارے صوبے میں سابق حکومت نے پشاور کو کھنڈرات میں تبدیل کر دیا ،ہر جانب تباہی کے آثارہیں ،انہوں نے کہا کہ اے این پی حکومت میں آ کر عوام کی محرومیوں کا ازالہ کرے گی ، ہر ضلع میں ایک یونیورسٹی اور ہر حلقہ میں ایک کالج کے وعدے کو عملی جامہ پہنائے گی ، مرکزی سے اپنے حقوق حاصل کریں گے اور ترقی کے نئے دور کا آغاز کریں گے، انہوں نے کہا کہ سابق صوبائی حکومت نے بے روزگاری کے خاتمے کیلئے گدھوں کی تجارت شروع کیاور نوجوانوں کو چوہے مار مہم پر لگا دیا گیا ، انہوں نے کہا کہ انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ حکومت کی غیر سنجیدگی کی وجہ سے بے روزگاری اور مہنگائی میں اضافہ ہوا ، انہوں نے کہا کہ اے این پی کامیابی کے بعد بے روزگاری کے خاتمے پر توجہ دے گی اور نوجوانوں کو 10لاکھ تک بلاسود قرضے فراہم کرے گی تاکہ وہ اپنے لئے روزگار کے مواقع پیدا کر سکیں، بی آر ٹی اپنے ذاتی مقاصد کیلئے شروع کی گئی اور مفادات حاصل کر کے اسے ادھورا چھوڑ دیا گیا ، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ اے این پی حکومت میں آ کر بی آر ٹی مکمل کرے گی ،انہوں نے یاد دلایا کہ اے این پی نے اپنے دور حکومت میں حیات آباد سے چارسدہ روڈ تک رنگ روڈ کی بحالی کا کام کیا اور اب دوبارہ چمکنی تا چارسدہ روڈ اور سدرن بائی پاس کی تعمیر یقینی بنائیں گے تاکہ ارد گرد کے علاقوں کو لنک کیا جا سکے ، انہوں نے پارٹی عہدیداروں اور کارکنوں پر زور دیا کہ الیکشن کی بھرپور تیاریاں جاری رکھیں اور عوام اپنے حقوق کے تحفظ اور اپنی آئندہ نسلوں کی بقا کیلئے اے این پی کو کامیاب کریں۔