The ANP president assured the committee that in accordance with its specific recommendations the party would make public concrete steps for implementation on September 1, after the completion of by-elections in the country.

 
PESHAWAR: The fact-finding committee appointed by the central executive committee of Awami National Party to look into the factors responsible for the party’s electoral defeat in May 11 general elections, has presented its report to party president Asfandyar Wali Khan.
The report was presented to party’s central president on Saturday. The committee chairman, Bashir Ahmad Khan Mattak, and its members, including Jamila Gilani and Sheikh Riaz, presented the report.
Talking to the committee members, the ANP president appreciated the hard work, seriousness and honesty of the committee in performing its work. By preparing a comprehensive report based on the opinions of hundreds of party workers the committee has done a great service to the cause of the party, he said.
Asfandhyar Wali  Khan also admired the contributions of the party workers who turned up before the committee and recorded their frank and critical opinions. Their evaluations, analysis and criticism express their concern and love for the party. The suggestions would go a long way to help the party in preparing itself for the future challenges.
The central president assured the fact-finding committee that after going through the report the party leadership would implement each and every recommendation. He said that the ANP had the unique distinction of being the only party to take the process of introspection to its logical conclusion. “We are determined to adhere to the democratic culture that we have inherited from Bacha Khan and Wali Khan,” he said.
The ANP president assured the committee that in accordance with its specific recommendations the party would make public concrete steps for implementation on September 1, after the completion of by-elections in the country.

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کی فیکٹس فائنڈنگ کمیٹی کے چیئر مین بشیر مٹہ نے پارٹی کے قائد اسفندیارولی خان کو عام انتخابات میں پارٹی کی شکست کے بارے میں تحقیقاتی رپورٹ پیش کردی ہے اس موقع پر کمیٹی کے ارکان جمیلہ گیلانی اور شیخ ریاض بھی ان کے ہمرا ہ تھے ‘ کمیٹی کے ارکان سے بات چیت کرتے ہوئے عوامی نیشنل پارٹی کے قائد اسفندیار ولی خان نے تفویض کردہ ذمہ داری بھرپور محنت ‘ ایمانداری اور انتہائی سنجیدگی سے نبھانے پر کمیٹی کے کردار کو سراہا ‘ انہوں نے کہا کہ ایک ایسی جامع رپورٹ کی تیاری جس میں سینکڑوں کارکنوں اور عہدیداروں کی رائے لی گئی پارٹی کاز کیلئے ایک بہت بڑی خدمت ہے ‘انہوں نے پارٹی کارکنوں کو بھی خراج تحسین پیش کیا جنھوں نے کمیٹی کے سامنے پیش ہو کر پوری ایمانداری اور اخلاص کے ساتھ اپنی تنقیدی رائے پیش کی ‘ ان کی تجاویز ‘ تجزئیے اور تنقید پارٹی کے ان کی بھرپور وابستگی اور محبت کااظہار ہے ‘ انہوں نے کہا کہ کارکنوں کی تجاویز مستقبل کے چیلنجز سے نمٹنے میں ممد و معاون ثابت ہونگی ‘ اسفندیارولی خان نے کمیٹی کو یہ یقین دہانی بھی کرائی کہ رپورٹ کا بغور جائزہ لینے کے بعد پارٹی قیادت اس پر من و عن عملدر آمد کرائے گی ‘ انہوں نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی کو یہ منفرد اعزاز حاصل ہے کہ اس نے ہر تحقیقاتی عمل کو اپنے منطقی انجام سے پہنچایا ہے کیونکہ ہم ان جمہوری روایات کے علمبردار ہیں جو باچاخانؒ اور خان عبدالولی خان سے ہمیں ورثے میں ملی ہیں ‘ انہوں نے کمیٹی کو یقین دہانی کرائی کہ رپورٹ کے بغور جائزہ اور ضمنی انتخابات کے بعد یکم ستمبر کو اس رپورٹ پر عملد ر آمد کیلئے عملی ا ور ٹھوس اقدامات کئے جائیں گے ۔