10-10-2013

Kabul: Asfandyar Wali Khan, leader of ANP met Mr Hamid Karzai, President of Afghanistan in presidency in Kabul today. Mr Ghulam Jelani Popal, Ambassador Maaroofi and Mr Zalmay Hewadmal assisted the Afghan President and Afrasiab Khattak of ANP was also present in the meeting.
President Hamid Karzai briefed the ANP leader about different transitions that are going on in Afganistan. He said Afghan security forces have already taken over the responsibilities of the security of their motherland. He added “we are preparing for the economic transition. Afghan people will be electing their President and members of Parliament next year”. He hoped that his recent interactions with Pakistani leaders as both the countries are facing challenges that could be overcome only jointly. Asfandyar Wali Khan assured Afghan President that all the democratic forces in Pakistan would fully support the Afghan-led and Afghan-owned peace process. He further said ” we are of the considered opinion that regional cooperation is a must to meet the challenge of the extremist violence”. Both sides agree to continue their relationship for peace.
 

کابل، اسفندیارولی خان کی افغان صدر حامد کرزئی سے ملاقات
پشاور ( پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماء اسفندیار ولی خان نے افغان صدر حامد کرزئی سے کابل کے ایوان صدر میں ملاقات کی ‘ غلام جیلانی پوپل ‘ سفیر معاروفی اور زلمے ہیواد مل نے افغان صدر کی معاونت کی جبکہ اے این پی کے رہنما افراسیاب خٹک بھی اس موقع پر موجود تھے ‘ افغان صدر نے عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما کو افغانستان سے متعلق نئی پیشرفت سے آگاہ کیا ‘ انہوں نے کہا کہ افغان سیکورٹی فورسز پہلے ہی ملک کی سیکیورٹی کی ذمہ داریاں سنبھال چکی ہیں‘ ہم اقتصادی چیلنجز سے نمٹنے کی تیاری کر رہے ہیں ‘افغان اپنے نئے صدر اور ارکان پارلیمنٹ کا انتخاب اگلے سال کرینگے ‘ انہوں نے امیدظاہر کی کہ پاکستانی حکام کے ساتھ ان کی حالیہ ملاقاتیں نتیجہ خیز ثابت ہونگی کیونکہ دونوں ممالک کو درپیش مسائل یکسانیت رکھتے ہیں اور مل کر ان کے حل کیلئے کوششیں کرنا ہونگی ‘ اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما نے افغان صدر حامد کرزئی کو یقین دہانی کرائی کہ پاکستان کی تمام جمہوریت پسند قوتیں افغانوں کی جانب سے اور افغانوں کے اپنے امن مشن کی بھرپور سپورٹ کرینگی ‘ انہوں نے کہا کہ ہمیں یہ محکم یقین ہے کہ خطے میں دہشت گردی جیسے مسائل سے نمٹنے کیلئے باہمی تعاون ناگزیر ہے ‘ دونوں جانب سے مستقبل میں بھی امن کیلئے کوششیں جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔