کالام، خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ امیرحیدر خان ہوتی نے بدھ کے روز کالام کے قریب مٹلتان میں 84 میگا واٹ کے حامل گورکین مٹلتان ہائیڈل پاور پراجیکٹ کا باقاعد ہ سنگبنیاد رکھا۔ سنگ بنیاد کی تقریب سے خطاب کر تے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوامیں پانچ سے سات سال کے عرصے میں بجلی پیداکرنے کے 24 منصوبے مکمل کئے جائیںگے جس سے2100میگاواٹ بجلی پیداہوگی،سوات سمیت صوبہ بھر میںاربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں پر تیزی کے ساتھ کام جاری ہے جن کی تکمیل سے لوگوں کی مشکلات میں نمایاں کمی آئی گی، موجودہ حکومت صوبے کے عوام کو درپیش مسائل کے حل اور انہیں زندگی کی بنیادی سہولیات فراہم کرنے کے لئے سنجیدہ اقدامات اٹھارہی ہیں جبکہ سوات کی تعمیروترقی ہماری ترجیحات میں ہے کیونکہ یہاں کے لوگوں نے قیام امن کے لئے جو قربانیاں دی ہیں وہ ناقابل فراموش ہیں

اس موقع پر سینئرصوبائی وزراءرحیم دادخان ،بشیراحمدبلورکے علاوہ صوبائی وزیراطلاعات میاں افتخار حسین اوراے این پی سوات کے صدر اوررکن صوبائی اسمبلی شیرشاہ خان، انرجی اینڈ پاور ڈیپارٹمنٹ کے سیکرٹری ظفر اقبال، شیڈو کے ایم ڈی بہادر شاہ، پراجیکٹ ڈائریکٹر عرفان، کمشنر ملاکنڈ فخر عالم، ڈی آئی جی ، ڈی سی او کامران رحمان اور لوگوں کی بڑی تعداد موجود تھی۔

امیرحیدرخان ہوتی نے کہا کہ صوبائی حکومت کے مرتب کر دہ ہائیڈرو پاور جنریشن ایکشن پلان کے تحت صوبے میں بجلی پیدا کرنے کے 24منصوبے مکمل ہوں گے جس سے2100 میگا واٹ بجلی پیداکی جاسکے گی،ان منصوبوں سے ملک میں جاری بجلی بحران میں کمی آئے گی۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت کو دوسروں صوبوں پر سبقت حاصل ہے کہ اُس نے توانائی کے قومی بحران میں کمی کے لئے سب سے پہلے عملی اقدامات اُٹھائے ۔اُنہوں نے کہا کہ پن بجلی پیدا کرنے والے علاقوں کی رائلٹی کو 5 فیصد سے 10 فیصد کر دیا گیا ہے اس طرح اس منصوبے سے مقامی افراد کو10 فیصد رائلٹی کے حساب سے 26کروڑ روپے ملیں گے جبکہ صوبائی حکومت کو 2ارب 61 کروڑ روپے کا منافع ملے گا،انہوں نے کہاکہ اس پراجیکٹ میں 250 آسامیوں پر مقامی افراد کو بھرتی کیاجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ درال خوڑ پراجیکٹ سے مقامی افراد کو 10 کروڑ روپے رائلٹی ملے گی،وزیر اعلیٰ نے کہاکہ صوبائی حکومت کالام میں سیاحت کے فروغ کے لئے سیاحتی پوائنٹ قائم کرے گی جبکہ جدیدطرز پر سکول اورہسپتال بھی قائم کیا جائے گا،انہوںنے کہا کہ صوبائی حکومت سوات میں قیام امن کے بعد اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں پر کام کررہی ہے جن میں واٹر سپلائی سکیموں کے علاوہ مینگورہ فتح پورروڈ، مہوڈنڈ ،باغ ڈھیرئی سے مدین اورکانجو سے مدین تک کی شاہراہوں کی تعمیرشامل ہے۔ اس موقع پر انہوںنے حلقہ پی کے 85 کےلئے 12 کروڑ روپے کے ترقیاتی پیکج کا اعلان کیا جس سے علاقے میں چھوٹے موٹے ترقیاتی کام اور لوگوں کی بنیادی ضروریات کے منصوبے مکمل کئے جائیں گے۔

قبل ازیں وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا نے گورکین مٹلتان ہائیڈروپاﺅر پراجیکٹ کا سنگ بنیاد رکھا ۔اس موقع پر انرجی اینڈ پاور کے سیکرٹری ظفر اقبال، شیڈو کے ایم ڈی بہادر شاہ نے وزیراعلیٰ کو بریفینگ دیتے ہوئے بتایا کہ پراجیکٹ میں 6 کلومیٹر طویل ٹنل ہو گی اس کا مجموعی رقبہ 200 کنال ہے ۔اُنہیں بتایا گیا کہ منصوبے پر 15 ارب 14 کروڑ روپے خرچ ہوں گے ۔ تقریب سے سینئر صوبائی وزیر رحیم داد خان ،رکن صوبائی اسمبلی شیر شاہ خان اورعلاقے میں دیرینہ خدائی خدمتگار سخی بابا نے بھی خطاب کیا جبکہ رکن صوبائی اسمبلی سید جعفر شاہ نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا ۔ وزیر اعلیٰ نے پراجیکٹ کی افتتاحی تقریب میں زیادہ تعداد میں شرکت اور اُن کے شاندار استقبال پر علاقے کے لوگوں کا شکریہ ادا کیا اور وعدہ کیا کہ وہ بہت جلد کالام میں بڑے جلسہ عام سے خطاب کریں گے اُنہوں نے اس امر کی نشاندہی کی کہ پنڈال میں موجود ہزاروں لوگوں سے زیادہ لوگ باہر سڑک پر اُن کی تقریر سننے کے لئے کھڑے ہیں۔