خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ امیرحیدر خان ہوتی نے اتوارکے روزمردان میں ایک ارب 91کروڑروپے کی لاگت سے مکمل ہونے والے ایسٹرن اورویسٹرن بائی پاسزکا باضابطہ افتتاح کردیا۔دونوں شاہراہوں پرٹریفک کھول دی گئی ہے ۔انہوں نے 14کلومیٹرمردان چارسدہ روڈکودورویہ کرنے کے تعمیری کام کابھی افتتاح کیاجو91کروڑروپے کی لاگت سے مکمل کی جائے گی۔اس موقع پرمنعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہاکہ عبدالولی خان یونیورسٹی اورباچا خان میڈیکل کالج کی طرح مواصلات کے شعبے میں سڑکوں کے یہ میگاپراجیکٹس نہ صرف مردان بلکہ ملحقہ اضلا ع کی تعمیروترقی ،خوشحالی اورشاندارمستقبل کی ضمانت ثابت ہوں گے۔انہوں نے عوام کے مطالبے پرتالیوں کی گونج میں اعلان کیاکہ دونوں سڑکوں پرلوگوں سے ٹال ٹیکس وصول نہیں کیاجائے گا۔انہوں نے اس ضمن میں متعلقہ حکام کوواضح ہدایات دیں۔

وزیراعلیٰ نے کہاکہ ایک ارب 67کروڑروپے کی لاگت سے ناردرن بائی پاس روڈپرکام جاری ہے جس کی تکمیل سے مردان شہرکے گردرنگ روڈمکمل ہوجائے گی اس سے مستقبل میں مردان شہرکے پھیلاؤکی ضروریات پوری ہوسکیں گی۔انہوں نے کہاکہ رنگ روڈکے ساتھ سروس روڈ،حفاظتی دیواراورٹریفک کورواں رکھنے کیلئے پانچ فلائی اوورزبھی تعمیرکیے جائیں گے جس پرڈیڑھ ارب روپے سے زائدلاگت آئے گی ۔عوام کے اس مطالبے پرکہ بائی پاس کو امیرحیدرخان ہوتی کے نام سے موسوم کیاجائے وزیراعلیٰ نے پارٹی کے ذمہ داروں اورپختونخواہائی وئے اتھارٹی کے حکام کوہدایت کی کہ بائی پاسزکیلئے پختونوں کے قومی مشاہیر میں سے کسی کانام منتخب کیاجائے تاکہ قوم کیلئے ان کی جدوجہداورقربانیوں کویادرکھاجائے ۔

انہوں نے مردان صوابی روڈپرسنگ مرمرکے مقام پرایسٹرن بائی پاس کاافتتاح کیابعدازاں وہ گاڑیوں کے ایک لمبے جلوس میں بائی پاس پرسفرکرتے ہوئے ویسٹرن بائی پاس کاافتتاح کرنے کیلئے مردان مالاکنڈروڈپرجھنڈئے پہنچے ۔راستے میں انہوں نے مردان چارسدہ روڈکودورویہ کرنے کے تعمیراتی کام کابھی افتتاح کیاجس پر91کروڑروپے لاگت آئے گی۔اس موقع پرپختونخواہائی ویزاتھارٹی کے ایم ڈی اعجازیوسفزئی نے نقشے کی مددسے وزیراعلیٰ کومردان رنگ روڈکے تینوں حصوں کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی۔انہوں نے کہاکہ ایسٹرن بائی پاس روڈرشکئی کے نزدیگ بہرام کلے سے شروع ہوکرمردان صوابی روڈکوسنگ مرمرکے مقام پر ملاتاہے ۔ویسٹرن بائی پاس بہرام کلے این-45)سے نکل کر مالاکنڈروڈکوموضع جھنڈئی میں ملاتاہے جبکہ ناردرن بائی پاس روڈسنگ مرمرکلے مردان صوابی روڈسے خان گھڑی کے مقام پرمالاکنڈروڈکوملادے گا۔قبل ازیں وزیراعلیٰ سنگ مرمرپہنچے تو ان کاملی نغموں،پُرجوش نعروں اورپھولوں کی پتیوں سے والہانہ استقبال کیاگیا۔فضامیں سینکڑوں غبارے چھوڑے گئے ۔سنگ مرمرسے جھنڈئے چوک تک تیس کلومیٹرراستے کوآرائشی دروازوں،سرخ جھنڈوں اورقائدین کی قدآورتصاویرسے سجایاگیاتھا۔راستے میں واقع مختلف آبادیوں کے لوگوں نے سڑک کے دونوں جانب کھڑے ہوکرپھولوں کی پتیاں نچھاورکرکے وزیراعلیٰ کے جلوس کااستقبال کیا۔وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی نے جھنڈے میں تبلیغی جماعت کے مرکز مسجد الفاروق کا دورہ کیا جہاں دعوت تبلیغ کے مقامی امیرموناحبیب الحق صاحب اور دیگر ذمہ داران سے بات چیت کر تے ہو ئے اُنہوں نے کہا کہ دعوت تبلیغ کی جماعت مسلمانوں کی اصلاح کے لیے عظیم خدمات انجام دے رہی ہے اور ایک مسلمان کی حیثیت سے دین کی ترویج ہم سب کی ذمہ داری ہے ۔ اُنہوں نے کہا کہ وہ پہلے بھی مرکز آتے رہے ہیں اور آئندہ بھی علمائے کرام سے رہنمائی لینے کے لیے آئیں گے ۔

اُنہوں نے کہا کہ تبلیغی مرکز کے سامنے مالاکنڈ روڈ پر 110فٹ لمبائی اور21فٹ اونچائی کے حامل اوور ہیڈ برج کی پہلے ہی منظوری دی جاچکی ہے جس پرایک کروڑ28لاکھ روپے خرچ ہوں گے جبکہ مرکز میں آنے والوں کے لیے مزید سہولیات کی فراہمی کے لیے اُنہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایات جاری کر دی ہیں ،اس موقع پر دعوت تبلیغ کے مقامی امیر نے مرکز آمد پر وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی کو خوش آمدید کہا اور بات چیت کر تے ہوئے کہا کہ مسلمانوں میں آخرت کی جوابدہی کا احساس پیدا ہوجائے تو تمام معاملات درست ہو سکتے ہیں ۔اُنہوں نے کہا کہ مساجد کی تعمیر ومرمت کے کاموں میں بھرپور دلچسپی لینے پر وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی کی تعریف کی اور ان کی کامیابی کے لیے دعا فرمائی۔ اس موقع پررکن قومی اسمبلی حمایت اللہ مایار،رکن صوبائی اسمبلی احمدخان بہادر،اے این پی صوابی کے صدرحاجی رحمن اللہ،مردان کے صدرفاروق اکرم خان ،جنرل سیکرٹری عمران ماندوری ،جاویدیوسفزئی ،عطاء اللہ خان اوراے این پی کے دیگرعہدیداران کے علاوہ ڈویژنل اورضلعی حکام بھی موجودتھے۔