پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے سینیٹ چیئرمین کے نتائج کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ چیئرمین سینیٹ انتخابات نتائج جمہوریت کیلئے تاریک ترین دن ہے، واضح اکثریت کے باوجود چیئرمین سینیٹ منتخب نہ ہونا غیرجمہوری روایات پروان چڑھارہی ہے۔

باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں اے این پی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کہا کہ ووٹ مسترد ہونا بھی دھاندلی ہے جس کیلئے اپوزیشن اور عوام کو آواز اٹھانی ہوگی۔ حکومت نے دھونس، دھاندلی اور دبائو کے ذریعے اپنا چیئرمین منتخب کروایا۔ اپوزیشن اراکین نے پہلے ہی خدشات کا اظہار کیا تھا جس کو نہیں سنا گیا، یہ غیرجمہوری عمل ہے۔ انہوں نے کہا کہ اے این پی ان نتائج کو مسترد کرتی ہے، اپوزیشن کے مشترکہ لائحہ عمل کا ساتھ دیں گے۔جس طرح ووٹوں کو مسترد کیا گیا وہ بھی غیرآئینی اقدام تھا، آئین کے تحت تمام 7 ووٹ درست قرار دیے جاسکتے تھے۔اس ملک میں جمہوریت کو پنپنے نہیں دیا جارہا، شرمناک طریقے اپنائے جارہے ہیں۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ خفیہ کیمرے کیوں لگائے گئے؟ کیا اس حوالے سے ذمہ داران کو سزا دی جائیگی؟ عام انتخابات کے بعد سینیٹ انتخابات کو بھی متنازعہ بنادیا گیا جو جمہوریت کیلئے نیک شگون نہیں۔