کراچی( پ ر) عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے تھنک ٹینک کا اجلاس گذشتہ روز صوبائی صدر شاہی سید کی زیرصدارت مردان ہائوس میں منعقد ہوا جس میں فیصلہ کیا گیا کہ تمام اضلاع میں ورکرز کنونشن منعقد کرائے جائیں گے۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ 06ستمبر کو ڈسٹرکٹ ایسٹ کے تحت نیو سبزی منڈی میں ورکرز کنونشن کا انعقاد کیا جائیگا۔13ستمبر کو ضلع کورنگی، 20ستمبر ڈسٹرکٹ سائوتھ، 27ستمبر ڈسٹرکٹ سنٹرل میں ورکرز کنونشن ہوں گے۔04اکتوبر کو ڈسٹرکٹ ملیر جبکہ 11اکتوبر کو ضلع غربی میں ورکرز کنونشن منعقد کئے جائیں گے۔ اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ 23ستمبر کو پی ایس ایف کے زیراہتمام پختون کلچرل ڈے بھی بھرپور طریقے سے منائی جائیگی اور عوامی نیشنل پارٹی کے کارکنان اس میں بھرپور شرکت کریں گے۔ ورکرز کنونشن سے صوبائی صدر شاہی سیدر اور دیگر صوبائی و مرکزی قائدین خطاب کریں گے۔

اس موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اے این پی کے صوبائی صدر شاہی سید کا کہنا تھا کہ اے این پی کراچی شہر کے پختونوں کی نمائندہ جماعت ہے۔کراچی دنیا بھر میں آبادی کے لحاظ سے پختونوں کا سب سے بڑا شہر ہے، شہر کی سیاست اور معاشرت کے فیصلوں میں اے این پی کو نظرانداز کرنیوالے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں۔کراچی کی تعمیر اور ترقی میں پختونوں کا سب سے بڑا کردار ہے۔حکومتی جماعتیں اگر شہر کے مسائل حل کرنے میں سنجیدہ ہیں تو اے این پی قیادت کو اعتماد میں لینا ہوگا۔

اے این پی کے صوبائی صدر کا مزید کہنا تھا کہ کراچی کی ترقی کیلئے صوبائی اور وفاقی حکومت کے ہر جائز اور آئینی اقدام کی حمایت کرتے ہیں۔نالوں کے اطراف میں قائم تجاوزات کے خلاف آپریشن سے پہلے متاثرہ گھرانوں کیلئے ریلیف پیکج کا اعلان کیا جائے۔یہ تجاوزات انتظامیہ اور تمام متعلقہ اداروں کی ملی بھگت سے ہوئے ہیں۔ان قبضوں میں ملوث افسران کے خلاف سخت ترین کارروائی کی جائے۔ ندی نالوں کے قریب وہ لوگ آباد ہیں جن کے پاس سر چھپانے کے لئے جگہ نہیں، انکے مکانات گرانے سے پہلے متبادل رہائش کا بندوبست ضروری ہے۔اے این پی کے صوبائی صدر شاہی سید کا کہنا تھا کہ اس شہر کے اصل قابضین کے خلاف کارروائی ضروری ہے جنہوں نے اس شہر کے سینکڑوں رفاحی پلاٹوں پر قبضے کرکے کمرشل پلازے کھڑے کئے ہیں۔ ملیر اور ناردرن بائی پاس کے اطراف میں ہزاروں ایکڑ سرکاری اراضی انتظامیہ کی ملی بھگت سے قبضہ کرکے فروخت کیا گیا ہے۔

انہوں نے حکومت اور سپریم کورٹ سے مطالبہ کیا کہ کراچی شہر کے ان اصل قابضین کے خلاف کارروائی کرکے سرکاری زمینوں اور رفاحی پلاٹس واگزار کرایا جائے