پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل اور پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے ترجمان میاں افتخارحسین نے کہا ہے کہ حکومتی رکاوٹوں، پابندیوں،پروپیگنڈوں کے باوجود پی ڈی ایم کا پشاور میں منعقدہ جلسہ کامیاب ترین رہا۔ حکومت نے میڈیا کو عوامی ٹیکس کے پیسوں کے ذریعے ذاتی مفادات کیلئے استعمال کیا لیکن ناکام رہے۔جلسہ گاہ میں انٹرنٹ سروس معطل کیا، رکاوٹیں کھڑی گئیں، سڑکیں بلاک کی گئیں تاکہ عوام کو اس عظیم الشان جلسے میں شرکت سے روک سکے۔موٹروے تک کو بند کیا گیا تھا۔حکومت نے پوری کوشش کی کہ پی ڈی ایم جلسے میں عوام شرکت نہ کریں لیکن ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔

ترجمان پی ڈی ایم کے مطابق دہشت گردی الرٹس، پھر کورونا سے لوگوں کو ڈرایا گیا،جلسے کی اجازت نہیں دی گئی۔سارے صوبے میں جگہ جگہ ناکے لگا کر راستے بند کر دیں تاکہ قافلے وقت پر جلسہ گاہ نہ پہنچ سکے ،پھر بھی اتنا بڑا جلسہ اس بات کا ثبوت ہیں کہ مہنگائی کے مارے عوام اس نااہل اور مسلط شدہ حکومت سے تنگ آگئے ہیں ۔ حکومتی ترجمان جھوٹ پہ جھوٹ بول کر اپنا دل اور بنی گالہ میں بیٹھے افراد کو خوش کررہے ہیں۔پی ڈی ایم کی جانب سے پختونخوا سمیت پورے پاکستان کے عوام کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔عوام نے عمران خان کی کال، کورونا کو اپوزیشن کے خلاف استعمال اور حکومتی پروپیگنڈا مسترد کیا۔اپوزیشن نے کورونا سے بچنے کیلئے شرکاء کو ماسک اور سینیٹائزرز فراہم کئے گئے۔ حکومت نے کورونا کے روک تھام کیلئے بھی سنجیدہ اقدامات نہیں اٹھائے جس کا خمیازہ عوام کو بھگتنا پڑ رہا ہے۔پی ڈی ایم کی تاریخی کامیاب جلسے کو ناکام قرار دینا دل کو لبھانے کیلئے اچھا مشغلہ ہے۔پی ڈی ایم کے کامیاب ترین جلسوں نے حکومت کے اوسان خطا کر دیے ہیں۔

میاں افتخارحسین نے کہا کہ عوامی حمایت سے محروم حکومت میڈیا اور سوشل میڈیا کے ذریعے اپنے آپ کو مصنوعی طریقے سے زندہ رکھنے کی ناکام کوشش کر رہی ہے۔ہم خیبر پختونخوا کے عوام کے تہہ دل سے مشکور ہیں کہ انھوں نے کثیر تعداد میں شرکت کرکے حکومت پر عدم اعتماد کا اظہار کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ موٹروے کو ر شکئی انٹر چینج پر بند کرنا، جلسہ گاہ اور اطراف میں انٹرنٹ کو مکمل بند کرنا، جلسہ گاہ سے تین کلومیٹر دور سڑکوں کو مکمل بلاک کرنا حکومت کی بوکھلاہٹ کا واضح ثبوت ہے لیکن عوام مزید اس نااہل اور سلیکٹڈ حکومت کو برداشت نہیں کرسکتی۔