پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری، پارلیمانی لیڈر اور سابق صوبائی وزیرتعلیم سردارحسین بابک نے کہاہے کہ تعلیم صوبائی محکمہ ہے اور وفاقی وزارت اور وزیر غیرآئینی ہے۔ صوبائی وزیر کا کہنا ہے کہ بچے گھروں کے مقابلے میں سکولوں میں محفوظ ہیں اور غیرآئینی وفاقی وزیر نے تعلیمی اداروں کو بند کرنے کا اعلان کیا۔

باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردارحسین بابک نے کہا ہے کہ حکومت کورونا سے نمٹنے کیلئے زمینی صورتحال کے مطابق انتظامات سے بھاگ رہی ہے اور عوام میں کورونا سے آگاہی کی بجائے خوف وہراس پیدا کررہی ہے ۔ حکومت کو تعلیمی اداروں کی بندش کا فیصلہ سوچ سمجھ سے کرنا چاہیئے تھا۔ طلباء کا قیمتی وقت ضائع کیا جارہا ہے۔ بجائے اس کے کہ حکومت وبا سے بچنے کیلئے اقدامات اٹھائے، جلد ہی تعلیمی اداروں کو بند کرنے کا حکم صادر فرمادیتی ہے۔

سابق صوبائی وزیرتعلیم کا کہنا تھا کہ حکومت کو چاہیئے کہ عوام کو آگاہ کریں اور پھر عدالت عظمیٰ سے جھوٹ بولنا نہ پڑے۔ موجودہ حکومت کی غیرذمہ داری نے عوام کو مسائل کے دلدل میں پھنسا دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت عوام کے مسائل میں اضافے کا باعث ہے۔ انہیں فوری طور پر گھر جانا چاہیئے اور ملک وقوم پر رحم کرنی چاہیے۔ یہ حکومت اگر زیادہ دیر تک رہتی ہے تو کمزورمعیشت اور مہنگائی عوام کو مزید لے ڈوبے گی۔

انہوں نے کہا کہ عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے۔ عوام کا حکومت پر کوئی اعتماد نہیں ہے۔ وہ بیزار ہوچکے ہیں۔ حکومت کی کرپشن اور بدانتظامی نے عوام کو مایوس کردیا ہے۔