چارسدہ ( پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کہا ہے کہ آج پشتونوں کو متفق ومتحد ہونے کی ضرورت ہے۔ پشتون قومی جرگہ میں پشتون قیادت کا ایک پیج پر آنا خوش آئند ہے، ہم نے بنیاد رکھ دی اب دیگر دوست بھی اس کو بنیاد بناکر مزید مشاورت سے اس عمل کو وسعت دیں۔ باچاخان مرکز پشتونوں کا مشترکہ گھر ہے اور اس گھر سے پشتونولی کے پیغام میں کمی نہیں آنے دینگے۔ ولی باغ چارسدہ میں عوامی نیشنل پارٹی بلوچستان کے وفد سے بات چیت کے دوران اسفندیارولی خان نے کہا کہ پشتونوں کو درپیش مسائل ومصائب پر غور وخوص کیلئے پشتون قومی جرگہ طلب کیا گیا تھا اور یہ آخری جرگہ نہیں، آئندہ جرگے میں مشاورت کے عمل کو مزید وسعت دی جائیگی کیونکہ جو واقعات خطے میں رونما ہونے جارہے ہیں اس کے اثرات لامحالہ پشتون قوم اور پشتونخوا وطن پر پڑیں گے۔ اے این پی سربراہ کا کہنا تھا کہ موجودہ حالات سے باخبر رہنے کے لئے قوم کو چوکنا ہونا ہوگا اور اس میں تمام قومی مذہبی سیاسی قیادت بشمول قبائلی زعما، دانشوروں،وکلاء، لکھاریوں، نوجوانوں اور خواتین کواحساس ذمہ داری کا مظاہرہ کرناہوگا۔باچاخان مرکز سے پشتونوں کے حقوق اور وسائل پر اختیار،اتفاق واتحاد کی صدا بلند ہوتی رہے گی کیونکہ یہ ہمارا قومی فریضہ ہے۔ وفد میں ایڈیشنل سیکرٹری جنرل صاحب جان کاکڑ اراکین مرکزی کمیٹی صوبائی وزیر زراعت انجنئر زمرک خان اچکزئ حاجی نظام الدین کاکڑ،صوبائی جنرل سیکرٹری مابت کاکا،مرکزی نائب صدر ملک عثمان اچکزئ مرکزی جوائنٹ سیکرٹری رشید خان ناصر نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے عبدالرزاق شامل تھے۔ بعد ازاں اے این پی سربراہ کی جانب سے وفد کے اعزاز میں ظہرانہ دیا گیا۔