پشاور( پ ر٩) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و ڈپٹی اپوزیشن لیڈرسردار حسین بابک نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت ذخیرہ اندوزوں اور اشیائے ضروریہ کی قیمتیں آسمان تک لے جانے والوں کے خلاف کریک ڈائون کرے۔ صوبے کے تمام علاقوں کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہیں اور صوبے کے کونے کونے سے یہی خبریں مل رہی ہیں کہ اس سخت وقت میں بھی مصنوعی بحران پیدا کیا جارہا ہے، حکومت ضلعی انتظامیہ کی مدد سے ذخیرہ اندوزوں کے مذموم عزائم کو ناکام بنائیں اور غریب عوام کو ہر طرح سے ریلیف پہنچانے کیلئے عملی اقدامات اٹھائیں۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ زکوٰة فنڈز جاری کرنے کے احکامات جاری کریں کیونکہ پی ٹی آئی کی حکومت کے آتے ہی غریب اور مستحق افراد کو زکوٰة فنڈ دینا بند ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مشکل کی اس گھڑی میں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی مالیت میں اضافہ ناگزیر ہے کیونکہ کاروباری سرگرمیاں بند ہوچکی ہیں، لوگ گھروں میں محصور ہیں اور باہر نکلنے کا ماحول بھی نہیں۔ سردار حسین بابک کا کہنا تھا کہ ہر طرف خوراک کی کمی کی رپورٹس آرہی ہیں، مرکزی حکومت تیل کی قیمتوں میں کمی کے بعد یہاں خاطر خواہ کمی کریں۔ تاکہ عوام کو ریلیف پہنچایا جاسکے۔ حکومت کو اس سخت حالات میں عوام سے پیسہ بٹورنے کی روش ترک کرنی چاہیے۔ حکومت نت نئے تجربات کے بجائے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی لائے اور مصنوعی قلت پیدا کرنے والوں کے ساتھ کوئی رعایت نہیں برتنی چاہیے۔ مصیبت کی اس گھڑی میں عوام اپنا اور اپنے پڑوسیوں کے ساتھ مالی مدد سے دریغ نہیں کرنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت صوبے کے تمام پارلیمانی لیڈران کے ساتھ مل کر حالات کا مقابلہ کرنے اور عوام کو ہر ممکن سہولت و ضرورت بہم پہنچانے کیلئے مربوط اور منظم لائحہ عمل بنائے تاکہ نہ صرف اس موذی مرض سے چھٹکارا پائے بلکہ عوام کے دکھ درد اور ضروریات زندگی بہم پہنچانے کا عمل یقینی بنایا جاسکے۔ سردارحسین بابک نے کہا کہ صوبائی حکومت مشاورت اور ضروری منصوبہ بندی کرنے میں بری طرح ناکام ہے، حکومت کو سولو فلائیٹ کے بجائے مشاور ت پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے۔ حکومت ہسپتالوں کو کورونا ٹیسٹ کے آلات اور ضروری میڈیکل اشیاء پہنچانے میں غیرسنجیدہ ہے۔ حالات کو کنٹرول کرنے اور وبا کے پھیلائو کو روکنے کیلئے عوام کا تعاون اور حکومتی بروقت اقدامات و انتظامات کے بغیر کوئی چارہ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت جنگی اور ہنگامی بنیادوں پر تمام طبی ضروریات پورا کرنے کیلئے ترقیاتی کاموں اور فنڈز منجمد کرکے تمام وسائل اور مشینری و توجہ اس وبا کے پھیلائو کو روکنے میں صرف کریں۔ حکومت ایسی صورتحال میں اپنی تمام حکومتی و ترقیاتی سرگرمیاں ترک کرنی چاہیے اور تمام وسائل وباء کو روکنے اور عوام کو ریلیف پہنچانے پر مرکوز کرنی چاہییے۔