پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی چئیرمین بلاول بھٹو زرداری اور پاکستان مسلم لیگ ن کے مرکزی صدر و قائد حزب اختلاف میاں شہباز شریف سے ٹیلی فونک گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ بات خوش آئند ہے کہ اپوزیشن جماعتوں نے متفقہ طور پر تبدیلی سرکار کا آئی ایم ایف زدہ بجٹ مسترد کردیا ہے۔اسفندیار ولی خان نے اپوزیشن رہنماوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تبدیلی سرکار نے آئی ایم ایف کی ایماء پر غریب دشمن بجٹ پیش کیا ہے،بجٹ میں غریب اور متوسط طبقے کو کوئی ریلیف نہیں دیا گیا۔اسفندیار ولی خان نے بجٹ کے حوالے سے مزید کہا کہ بجٹ میں ریونیو ہدف زمینی حقائق کے برعکس بہت زیادہ رکھا گیا ہے،اب ریونیو ہدف کو حاصل کرنے کیلئے غریب عوام کا خون چوسا جارہا ہے،پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ایک اعلامیے کے ذریعے بے تحاشہ اضافہ اس بات کا ثبوت ہے۔ اسفندیار ولی خان سے گفتگو کرتے ہوئے اپوزیشن رہنماوں نے اس بات پر اکتفا کیا کہ اپوزیشن جماعتیں اٹھارویں آئینی ترمیم میں کسی صورت ردوبدل برداشت نہیں کریگی۔پی ٹی آئی مختلف حیلوں بہانوں کے ذریعے اٹھارویں آئینی ترمیم میں ردوبدل کی خواہش مند ہے۔اسفندیار ولی خان نے ایک بار پھر متنبہ کیا کہ اٹھارویں آئینی ترمیم میں چھیڑ چھاڑ کی صورت میں اے این پی کرونا کے باوجود سڑکوں پر ہوگی۔