پشاور (پ ر) اے این پی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ آج اگر ہم آزادی میں سانس لے رہے ہیں تو یہ صرف اور صرف باچاخان اور ان کے پیروکاروں کی عظیم قربانیوں کی بدولت ہے۔ باچاخان برصغیر کے لوگوں کو انگریز کی غلامی سے نجات دلانے کے لئے میدان میں نکلے تھے اور اس شعور کو بیدار کرنے کے لئے انہوں نے نہ صرف اس زمانے میں مدرسے قائم کئے بلکہ جیلیں بھی کاٹیں۔ پنجاب کے خوشاب شہر کے حویلی عمر خان میں باچا خان اور ولی خان کی برسی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے میاں افتخارحسین نے کہا کہ باچا خان نے انگریز، ولی خان نے ڈکٹیٹروں اور ہم نے دہشت گردوں کے خلاف جنگیں لڑیں۔ اپنے عوام کے حقوق کے لئے انہوں نے بے پناہ قربانیاں دی، باچاخان کے پیروکاروں نے خون کے نذرانے پیش کیے، میرے اکلوتے بیٹے سمیت پارٹی کے سینکڑوں رہنما اور کارکن شہید کر دیے، لیکن وہ جھکے نہیں۔ انہوں نے قربانیاں دیں لیکن صوبے کو اسفندیار ولی خان کی قیادت میں نام اور اٹھارویں ترمیم کا تحفہ دیا۔ مہنگائی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے میاں افتخار حسین نے کہا کہ آج عمران خان کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی آسمان چھو رہی ہے، کرپشن بڑھ گئی ہے اور عوام حکومت کو بدعائیں دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرغا مرغی سے معیشت سنبھلنے والی نہیں۔ہر صوبے کے لوگ ہمارے بھائی ہیں لیکن ہمارے بھی کچھ حقوق ہیں اور ہمیں اپنے وسائل پر پورا اختیار ہونا چاہئے۔خیبرپختونخوا بجلی کی پیداوار میں خوکفیل ہے جو پورے ملک کو دی جارہی ہے لیکن ہمارے صوبے پر آٹا بند کیا جارہا ہے، اگر ہم پر آٹا بند کیا جاتا ہے تو ہمیں بھی یہ حق حاصل ہے کہ بجلی اور پانی بند کرے۔