پشاور(پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخارحسین نے اے این پی ضلع پشاور کی جائنٹ سیکرٹری زیبا آفریدی کے گھر پر حملے اور بھتہ وصولی کے فون کالز کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پشاور شہر بالخصوص اور پورا صوبہ بالعموم شہرناپرسان کی تصویر پیش کررہے ہیں۔ افسوسناک امر یہ ہے کہ اے این پی کارکنان کو ہر جگہ نشانہ بنایا جارہا ہے جبکہ حکومت وقت خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہی ہے۔ اے این پی ضلع پشاور کے صدر ملک فرہاد، جنرل سیکرٹری نصراللہ خان، ضلعی نائب صدر سردار زیب، ارباب نذیر اور تبسم کتوزئی کے ہمراہ زیبا آفریدی کی عیادت کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے میان افتخارحسین نے کہا کہ اس و اقعے کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے، پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنیوالے ادارے اس واقعے کی تحقیقات جلد سے جلد انجام تک پہنچائے اور ملزمان کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔ انہوں نے مطالبہ کیا شفاف تحقیقات میں سامنے لایا جائے کہ مذکور ہ واقعے کے پیچھے کونسے محرکات ہیں۔ ذرائع ابلاغ نے واقعے کو غلط رنگ دی ہے، ان کی کسی کے ساتھ ذاتی دشمنی نہیں، واقعے کی ایف آئی آر درج کی جاچکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ زیبا آفریدی کا تعلق سیاست اور ادب سے ہے، اے این پی کی ذمہ دار عہدیدار ہے جنہیں دن دیہاڑے اس طرح گھر کے اندر ٹارگٹ بنانا حکومتی و انتظامی نااہلی ہے۔ پولیس اور دیگر ادارے یہ ایک ٹیسٹ کیس لے کر ثابت کریں کہ قانون سب کے لیے یکساں اور ہر انسان کی جان و عزت انکے لئے برابر حیثیت رکھتی ہے۔