پشاور ( پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے منظور پشتین کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ گرفتاری کسی بھی مسئلے کا حل نہیں،عدم تشدد کے پیروکار ہونے کے ناطے ہم مکالمے اور گفت و شنید پر یقین رکھتے ہیں۔ اگر کوئی ایف آئی درج کی گئی تھی تو انہیں پہلے کیوں گرفتار نہیں کیا گیا۔ باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں اے این پی سربراہ نے مطالبہ کیا ہے کہ منظور پشتین کو فوری طور پر رہا کیا جائے کیونکہ اس قسم کی کارروائیوں سے احساس محرومی اور غم و غصے میں مزید اضافہ ہوگا۔ پشتون امن پسند اور پرامن لوگ ہیں، اگر کسی کو کوئی شکایت ہے تو بجائے اسکے کہ ان کی تلافی کی جائے یا ان سے بات کی جائے، رات کی تاریکی میں گرفتاری قابل مذمت اور افسوسناک ہے۔ حکومت مل کر ان تمام افراد سے بات چیت کریں جو احساس محرومی کا شکار ہے یا انہیں کوئی شکایت ہے۔ عوامی نیشنل پارٹی پشتون اتحاد کیلئے ہر وقت میدان میں کھڑی رہے گی اور ہر اس اقدام کی مذمت کرتی ہے جو بنیادی انسانی حقوق کے خلاف ہو۔