نوشہرہ( پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخارحسین نے کہا ہے کہ عوامی نیشنل پارٹی اصولی اور تاریخی مئوقف رکھنے والی جماعت ہے اور کسی بھی صورت سمجھوتے کا شکار نہیں ہوگی۔ باچاخان اور ولی خان برسی پر نوشہرہ امان گڑھ میں عظیم الشان جلسہ ہوگا جس میں مرکزی صدر اسفندیارولی خان بھی شرکت کریں گے۔ نوشہرہ جلوزئی میں جلسہ تقریب کی تیاریوں بارے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میاں افتخارحسین نے کہا کہ ہفتہ باچاخان کے سلسلے میں پہلا جلسہ نوشہرہ میں ہوگا جس کے بعد پورا ہفتہ اپنے اکابرین کے نام پر منائیں گے۔ اس بار پورے صوبے میں باچاخان اور ولی خان کی برسیوں کے موقع پر عظیم الشان جلسے منعقد ہوں گے ، کارکنان تیاریں کریں اور بھرپور طریقے سے باچاخان اور ولی خان کو خراج عقیدت پیش کریں گے۔ انہوں نے موجودہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ سلیکٹڈ حکمرانوں کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے ملک کا بیڑا غرق کردیا گیا ہے۔ ملکی سطح پر غربت میں بے تحاشا اضافہ ہوچکا ہے لیکن حکمران ٹس سے مس نہیں ہورہے۔موجودہ حکمرانوں کو ہم سلیکٹڈ کہتے ہیں اور کہتے رہیں گے۔ انہیں اقتدار دلوایا گیا ہے، یہ عوامی نمائندے نہیں۔حکومت سے متعلق ہمارے تحفظات ابھی بھی موجود ہیں۔اے این پی 2018 کے انتخابات کو صاف اور شفاف نہیں مانتی اور ان انتخابات کے نتیجے میں اقتدار میں آنیوالی جماعت کو عوام پر مسلط کیا گیا ہے اور سلیکٹڈ حکمرانوں کی نااہلیت نے پورے ملک کو تباہی کی جانب گامزن کردیا ہے۔ ملک بھر میں بڑھتی ہوئی مہنگائی نے غریبوں کے کمر توڑ دیے ہیں۔ اگر موجودہ حکومت کو مزید وقت دیا گیا تو خدانخواستہ ملک میں انارکی پھیلنے کا خدشہ پیدا ہوسکتا ہے۔