پشاور(پ ر)عوامی نیشنل پارٹی نے صوبائی دارالحکومت پشاور میں چکیسر سے تعلق رکھنے والے سکھ نوجوان رویندر سنگھ کے قتل کے خلاف توجہ دلاؤ نوٹس جمع کرادیا۔شانگلہ سے منتخب رکن صوبائی اسمبلی فیصل زیب خان کی جانب سے جمع کرائے گئے نوٹس میں کہا گیا ہے کہ جواں سال رویندر سنگھ اپنی شادی کا سامان خریدنے پشاور آیا تھا جنہیں بے دردی سے قتل کیا گیا۔ گذشتہ دو ماہ کے دوران دہشتگردی کی یہ تیسری واردات ہے اور خصوصاً تحصیل چکیسر میں امن و امان کی صورتحال انتہائی خراب ہوچکی ہے۔ تین ماہ گزرنے کے باوجود واردات کے ملزمان کا تاحال سراغ نہیں لگایا جاسکا۔نوٹس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ ملزمان کو فوری طور پر گرفتار کیا جائے تاکہ آئندہ ایسے واقعات رونما نہ ہو۔نوٹس کے مطابق اقلیتی برادری کا تحفظ ہمارا قومی فریضہ ہے اسلئے مذکورہ حلقے کے اقلیتی برادری کے جواں سال رویندر سنگھ کے قاتلوں کو فوری گرفتار کرکے مقتول اور اس کے خاندان کو انصاف فراہم کیا جائے۔ فیصل زیب خان کا مزید کہنا تھا کہ رویندر سنگھ کے قتل کو کئی دن گزرگئے لیکن قاتلوں کا کوئی سراغ نہ لگایا جاسکا جو حکومتی نااہلی ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ پولیس اور انتظامیہ اس معاملے پر فوری کارروائی کرتے ہوئے قاتلوں کی گرفتاری کیلئے ہنگامی کوششیں شروع کریں تاکہ پورے خیبرپختونخوا اور بالخصوص تحصیل چکیسر کی اقلیتی برادری کو بھی تحفظ کا احساس دیا جاسکے۔انہوں نے مزید کہا کہ صوبائی دارالحکومت میں نوجوان کا قتل کھلی دہشتگردی ہے، اے این پی غم کی اس گھڑی میں لواحقین کے ساتھ ہے اور قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچانے کیلئے ہر اقدام میں انکے ساتھ کھڑی رہے گی۔