ہرنائی(نمائندہ خصوصی)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ پشتون دنیا کی پرامن ترین قوم ہے جس نے تاریخ میں کبھی جنگ اور تشدد کی حمایت نہیں کی بلکہ ہمیشہ پرامن اور جمہوری طریقے سے اپنے حقوق کے حصول کے لئے جدوجہد کی ہے۔بلوچستان کے شہر ہرنائی میں فخرافغان باچاخان اور رہبرتحریک خان عبدالولی خان کی برسی کے موقع پر جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے ایمل ولی خان نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ جب بھی پشتونوں پر برا وقت اور مشکل مرحلہ آیا ہے،اے این پی کے قائدین اور اکابرین نے جرگہ طلب کرکے باہمی مشاورت سے آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا ہے اس وقت پشتونوں کو بحیثیت قوم انتہائی مشکل حالات کا سامنا ہے جس سے نمٹنے اور پشتون وطن کے مستقبل کو محفوظ بنانے کے لئے پشتونوں کو سر جوڑ کر بیٹھنا ہوگا پشتون قومی جرگہ بلانا وقت کی ضرورت تھی جس کا احساس کرتے ہوئے عوامی نیشنل پارٹی نے پشتون قومی جرگہ طلب کیا ہے۔ ایمل ولی خان نے کہا کہ یہ جرگہ پشتونوں کے مستقبل کے حوالے سے اہمیت کا حامل فورم ہے جس میں نہ صرف پشتون سیاسی و مذہبی قائدین بلکہ اس کے ساتھ ساتھ وکلائ،ا دیب، دانشور اور دیگر تمام طبقات سے تعلق رکھنے والے ہر مکتبہ فکر کے پشتون اکھٹے ہوں گے جو مل بیٹھ کر حالات کا تجزیہ کریں گے اور قوم کو مستقبل کا لائحہ عمل دیں گے۔ انہوںنے کہا کہ اس وقت ملک میں افرا تفری کا ماحول بنا ہوا ہے پشتونوں کو ہر شعبے میں مشکلات کا سامنا ہے ایسے میں باچاخان مرکز اپنا فرض نبھاتے ہوئے پشتون اتحاد و اتفاق کی آواز بلند کررہا ہے جس پر لبیک کہنا ہر پشتون کا قومی فریضہ ہے ۔ وفاقی حکومت بارے گفتگو کرتے ہوئے ایمل ولی خان نے کہا کہ تبدیلی کا خوش نما نعرہ لے کر آنے والی سلیکٹڈ حکومت گڈگورننس اور عوام کو ریلیف دینے میں مکمل ناکامی سے دوچار ہے، پہلے سے موجود مسائل مزید گھمبیر ہوچکے ہیں حتی کہ اب سلیکٹڈ کو لانے والے سلیکٹرز بھی اپنے انتخاب پر پریشان اور پشیمان ہیں اس وقت ملک میں حقیقی جمہوری قوتوں کو مشترکہ جدوجہد کرنی ہوگی اور مسلط شدہ حکمرانوں سے چھٹکارا پانا ہوگا۔