پشاور(پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی ترجمان زاہد خان نے کہا ہے کہ سینیٹ ممبران کی تنخواہوں میں اضافے کی اے این پی حمایت نہیں کرتی،اس وقت سینیٹ میں اے این پی کا کوئی ممبر موجود نہیں ہے،ستارہ ایاز نے اگر تنخواہیں بڑھانے کے حق میں ووٹ دیا ہو تو وہ اُس کا ذاتی فعل ہے،موصوفہ پارٹی سے بہت پہلے ڈسپلن کی خلاف ورزی پر نکالی جاچکی ہیں۔باچا خان مرکز پشاور سے جاری بیان میں زاہد خان نے کہا کہ سینیٹ ممبران کی تنخواہوں میں اضافے کی اے این پی بالکل بھی حمایت نہیں کرتی،مختلف ٹی وی چینلز ستارہ ایاز کے ووٹ کو اے این پی کا ووٹ کہہ رہے ہیں،اس وقت سینیٹ میں اے این پی کا کوئی ممبر موجود نہیں ہے۔ رہنما اے این پی کا مزید کہنا تھا کہ ستارہ ایاز کو پارٹی سے بہت پہلے ڈسپلن کی خلاف ورزی پر نکالا جا چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام مہنگائی کے ہاتھوں خودکشیاں کررہے ہیں، اور سینیٹرز لاکھوں میں تنخواہ لینے کے باوجود اضافے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ زاہد خان نے مزید کہا کہ اے این پی اس وقت وزراء اور پارلیمنٹرینز کی تنخواہوں میں اضافے کے مطالبے کی بجائے عوام کو ریلیف دینے کا مطالبہ کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو ریلیف دیا جائے نہ کہ اراکین پارلیمنٹ کی تنخواہوں میں اضافہ کیا جائے کیونکہ ملکی معیشت اس وقت اس قابل نہیں کہ لاکھوں روپوں میں تنخواہیں وصول کرنے والے اضافہ کے طلبگار ہوں۔