پشاور( پ ر) اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ کورونا جیسے وبائی صورتحال میں بھی پی آئی اے امارات اور دیگر خلیجی ممالک میں محنت کش پختونوں کو لوٹ رہی ہے۔500درہم کا ٹکٹ محنت کش پختونوں پر 2500درہم کے عوض فروخت کیا جارہا ہے۔غریب محنت کشوں کو نہ ہی سفارتخانے سے ریلیف مل رہی ہے اور نہ ہی وزارت خارجہ کوتاحال اُن کا حال احوال پوچھنے کی توفیق نصیب ہوئی ہے۔ باچا خان مرکز پشاور سے جاری اپنے بیان میں ایمل ولی خان نے کہا کہ پی آئی اے فوری طور پر غریب محنت کشوں کو لوٹنے کا سلسلہ بند کریں ،بلیک میں ٹکٹس فروخت ہورہے ہیں اورلگ رہا ہے کہ یہ سب کچھ خار نا پرسان میں ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اورسیز محنت کش باہر ملکوں میں ملک کے سفیر ہیں،اس نازک اور مشکل وقت میں بھی ملک کے ان سفیروں کو پی آئی اے اور سفارتخانے دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہے ہیں۔ ایمل ولی خان نے کہا کہ ان حالات کا حکومت وقت کو نوٹس لینا چاہیے ،حکومت اور وزارت خارجہ نے محنت کشوں کے لوٹ مار پر آنکھیں بند کررکھی ہے۔ غریب محنت کش اپنے گھروں کو واپسی کے منتظر ہیںاور بے چینی سے انتظار کررہے ہیں کہ وہ کب اپنے گھروں کو واپس ہونگے لیکن اس سارے مشکل گھڑی میں بھی تبدیلی سرکار کی نظریں غریب محنت کشوں کی جیبوں پر پڑی ہیں ۔ایمل ولی خان نے کہا کہ رمضان کے اس بابرکت مہینے میں جہاں حکومتیں اپنے شہریوں کو ریلیف دیتے ہیں اُسی مہینے میں بھی تبدیلی سرکار کا مقصد ملک کے اندر اور باہر اپنے شہریوں کو لوٹنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت دیگر خلیجی ممالک میں بھی محنت کشوں کی واپسی کیلئے انتظامات کریں کہ رمضان کے بابرکت مہینے میں ہی اُن کی باعزت واپسی یقینی ہو۔