پشاور(پ ر)اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و ڈپٹی اپوزیشن لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ حکومت منشیات فروشوں کے خلاف کریک ڈاؤن کریں۔ کورونا وباء کے اس نازک وقت میں منشیات فروش حالات کا ناجائز فائدہ اٹھا نا چاہتے ہیں۔سیکورٹی اور ذمہ دار ادارے کورونا کے محاذ پر مصروف عمل ہیں اور منشیات فروشوں کو کھلی چھٹی مل گئی ہے۔باچا خان مرکز پشاور سے جاری کردہ اپنے بیان میں سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ منشیات فروشوں کو اندازہ ہے کہ ساری انتظامیہ اور سیکورٹی فورسز وباء کو کنٹرول کرنے اور دوسری دفاعی سرگرمیوں میں مصروف ہوچکے ہیں۔ لیکن حکومت کو ان تمام تر حالات کے باوجود اس گھناونی کاروبار پر کڑی نظر رکھنی چاہیئے اور منشیات فروشوں کی اس گھناونی کاروبار کی بیخ کنی کرنی چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کے طول و عرض سے یہی رپورٹس مل رہی ہیں کہ منشیات فروش اس نازک ترین حالات میں اللہ کا خوف نہیں کرتے اور منشیات فروشی کے گھناونے کاروبار کو ترک کرنے سے باز نہیں آرہے۔ افسوس کیساتھ کہنا پڑ رہا ہے کہ ساری دنیا میں وباء نے انسانوں کو اپنے گھروں تک محدودکردیا ہے اور مسلمان اللہ سے کثرت سے استغفار میں مصروف ہیں۔ تمام انسان دوسرے انسانوں کیساتھ نیکی اور بھلائی کا سوچ رہے ہیں لیکن بد قسمتی سے منشیات فروش اس عالمی وباء میں بھی اس گھناونی کاروبار کے ذریعے پیسہ کمانے اور دوسرے انسانوں کی زندگیوں کیساتھ کھیلنے کا سوچ رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو پوری زور کیساتھ منشیات فروشوں کے اس مذموم اور انسان دشمن کاروبار کو نیست و نابود کرنا چاہیئے اور عوام کو بھی منشیات کے استعمال اور اسی کاروبار کو روکنے میں حکومت اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کیساتھ بھرپور تعاون جاری رکھنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ عوام اپنے گاؤں اور محلے میں اس گھناونی کاروبار کو ختم کرنے کیلئے بلا جھجک متعلقہ تھانوں میں رپورٹ درج کرائے اور عوام بالخصوص نوجوانوں کے روشن مستقبل کو بچانے کی خاطر اسے اپنا قومی فریضہ سمجھ کر اپنی ذمہ داری پوری کرے۔