پشاور ( پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخارحسین نے کہا ہے کہ آئین کی بالادستی ہی پاکستان کی بقا کی ضمانت ہے، اس ملک میں جمہوریت کی مضبوطی اور اداروں کے درمیان تصادم سے بچنے کیلئے آئین و قانون کا احترام اور پارلیمنٹ کی سپرمیسی ضروری ہے۔ عدالتی فیصلوں کی بنیاد آئین اور قانون ہے جسے ماننا ہی دراصل آئین کی بالادستی ماننا ہے۔ نوشہرہ میں تحصیل پبی کے تنظیمی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میاں افتخارحسین نے کہا کہ 22جنوری کو نوشہرہ میں فخرافغان باچاخان اور رہبرتحریک خان عبدالولی خان کی برسی تقاریب کا پہلا بڑا جلسہ عام ہوگا جس میں کثیر تعداد میں کارکنان سمیت مرکزی صدر اسفندیارولی خان اور دیگر قائدین خطاب کریں گے۔انہوں نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی پاکستان کے تمام اداروں کا احترام کرتی ہے اور کسی بھی تصادم سے بچنے کیلئے آئینی بالادستی ہی واحد راستہ ہے۔عدالتی فیصلوں کی بنیاد آئین اور قانون ہے جسے ماننا ہی آئینی بالادستی کو ماننا ہے۔ آئین و قانون کی نظر میں سب برابر ہیں، امتیازی سلوک نظام کو مزید کمزور کرے گا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یوٹرن کا عادی سلیکٹڈ وزیراعظم اپنے ماضی کی بیانات بھی بھول چکا ہے، پاکستان سب کا ہے اور ہر کوئی انصاف کا برابر حقدار ہے۔انہوں نے رہبرکمیٹی کے چار مطالبات کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر الیکشن کمیشن گذشتہ انتخابات میں غیرجانبدار کردار ادا کرتا تو آج دھاندلی کے نعرے نہ لگتے۔ غیرجانبدار الیکشن کمیشن، شفاف انتخابات اور بغیر کسی مداخلت کے انتخابات کیلئے جدوجہد جاری رہے گی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ کارکنان فخرافغان باچاخان اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان کی برسی تقاریب کیلئے تیار رہے اور اس سلسلے میں پہلا بڑا جلسہ عام نوشہرہ میں منعقد ہوگا جسکے لئے تمام تر تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔