2019 September سنگاپور اور ملائشیا کے دعویداروں نے ملک کو صومالیہ بنادیا،سردار حسین بابک

سنگاپور اور ملائشیا کے دعویداروں نے ملک کو صومالیہ بنادیا،سردار حسین بابک

سنگاپور اور ملائشیا کے دعویداروں نے ملک کو صومالیہ بنادیا،سردار حسین بابک

پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ ملک معاشی طور پر دیوالیہ ہو چکا ہے اور اس تباہی کے ذمہ دار موجودہ حکمران ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے تہکال پشاور میں شہید ابرار خلیل اور راشد خلیل کی پہلی برسی کے موقع پر منعقدہ تعزیتی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر انہوں نے شہداء کی قربانیوں کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا اور شہید ابرار خلیل کے بیٹے کی طرف سے تاحیات قافلے کا حصہ بننے کے عزم کو بھی سراہا، انہوں نے کہا کہ صوبہ خیبر پختونخوا تاریخ کے بدترین دور سے گزر رہا ہے، گزشتہ چھ سال سے صوبے میں تحریک انصاف کی حکومت نے خزانہ لوٹ لیا ہے اور صوبے کو بدترین معاشی و انتظامی بدحالی کا سامنا ہے، انہوں نے کہا کہ عمران خان نے پانچ سال تک ملک کو سنگا پور اور ملائشیا بنانے کے دعوے کئے لیکن حکومت میں آ کر پاکستان کو صومالیہ بنادیا گیا، انہوں نے کہا کہ مسلط وزیر اعظم کے مطابق پہلے ملک میں 15ارب روپے روزانی کی کرپشن ہوتی تھی لیکن گزشہ ایک سال سے وہ کرپشن بھی بند ہو چکی ہے تو پیسہ کس کی جیب میں جا رہا ہے، انہوں نے کہا کہ سفید پوش طبقہ جیتے جی مر چکا ہے، مہنگائی عروج پر ہے، ٹیکسز میں اضافے اور نئے ٹیکسوں کے نفاذ سے عام آدمی سے جینے کا حق بھی چھین لیا گیا، سردار حسین بابک نے کہا کہ ڈالر کی اونچی اڑان اور پاکستانی روپے کی بے قدری سے ملک کی بنیادیں ہلا دی گئیں لیکن نا اہل اور نا تجربہ کار حکمران چین کی بناسری بجا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ46روپے لیٹر والا افلاطون اسد عمر میدان سے بھاگ گیا جو اس بات کا ثبوت ہے کہ عوام کو دھوکہ دیا گیا، انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت پٹرول اور ڈیزل کی قیمت60روپے تک لے کر آئے،انہوں نے کہا کہ حکومت نے دو وفاقی بجٹ پیش کئے لیکن بدقسمتی سے دونوں بجٹ میں ہمارے صوبے کو نظر انداز کر کے کوئی میگا پراجیکٹ نہیں رکھا گیا، سردار حسین بابک نے مزید کہا کہ صوبے کی سستی بجلی ہمیں واپس مہنگے داموں فروخت کی جا رہی ہے جبکہ وولٹیج کا مسئلہ جوں کا توں ہے، انہوں نے کہا کہ بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافے سے کارخانے بند ہو چکے ہیں اور تاجر طبقہ اپنا کاروبار پاکستان سے منتقل کرنے میں مصروف ہے،انہوں نے استفسار کیا کہ پیسہ کہاں اور کس کی جیب میں جا رہا ہے؟ انہوں نے صوبے میں ڈینگی کی وبا پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ڈینگی کا وار زور و شور سے جاری ہے لیکن حکوم،ت کہیں نظر نہیں آ رہی، صوبائی جنرل سیکرٹری نے کہا کہ ڈینگی کی روک تھام کیلئے ہنگامی اقدامات کی ضرورت ہے اور ہسپتالوں میں داخل مریضوں کا مفت و بروقت علاج کر کے قیمتی انسانی جانوں کو بچانا حکمرانوں کی ذمہ داری ہے۔انہوں نے کہا کہ اے این پی تمام پختونوں کی جماعت ہے اور ہمیشہ پختونوں کے حقوق کیلئے میدان عمل میں موجود رہے گی۔

شیئر کریں