پشاور(پ ر)اے این پی رہنما عمران آفریدی نے پارٹی کی طرف سے شوکاز نوٹس کا جواب دے دیا ہے اور آج پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان، صوبائی جنرل سیکرٹری سردارحسین بابک اور دوسرے عہدیداران مختیار خان یوسفزئی، ثاقب اللہ چمکنی، نثارخان کی موجودگی میں باچاخان مرکز میں پیش ہوئے، انہوں نے تنظیم کو یقین دہانی کی اور رو برو کہا کہ وہ پارٹی ڈسپلن کے خلاف ورزی کا سوچ بھی نہیں سکتے، انہوں نے کہا کہ ان کے پورے خاندان نے ہمیشہ سے پارٹی کیساتھ وفاداری نبھائی ہے اور تاقیامت تک پارٹی کے اعتماد اور وابستگی کو عملاً نبھائیں گے، نئے اضلاع کے گزشتہ انتخابات میں پارٹی امیدوار کی کامیابی کیلئے انتھک کوشش کی ہے، انہوں نے کہا کہ وہ ساری عمر باچاخان اور ولی خان کے ایک ادنیٰ کارکن کی حیثیت سے جان و مال کی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے، انہوں نے کہا کہ اگر پارٹی نے کسی سطح پر بھی پارٹی کیلئے کام کرنے اور نظم و ضبط کی پابندی میں کوتاہی محسوس کی ہو تو اس کیلئے پارٹی سے معذرت خواہ ہوں اور تادم مرگ باچاخانی پر عمل پیرارہوں گا، اس موقع پر صوبائی صدر نے کہا کہ آپکی وضاحت اور پارٹی کیساتھ تجدید عہد اطمینان بخش ہے اور پارٹی کے ہر عہدیدار اور کارکن کو یہ بات ذہن میں رکھنی چاہیے کہ پارٹی آئین اور نظم و ضبط سے کوئی فرد بالا نہیں ہے، کارکن پارٹی کا سرمایہ ہیں، لیکن پارٹی آئین، اُصول، نظم و ضبط پر کمپرومائز نہیں کیا جائے گا،انہوں نے کہا کہ ہم سب کو پارٹی کے فروغ اور باچاخان، ولی خان کے پیغام کو گھر گھر پہنچانا اور باہمی اتحاد و اتفاق کو یقینی بنانا چاہیے، انہوں نے کہا کہ پارٹی نے ہمیشہ سے کارکنوں کو احترام کا مقام دیا ہے اور پارٹی نے ہمیشہ سے کارکنوں کو احترام کا مقام دیا ہے اور پارٹی ہمیشہ سے کارکنوں کی قربانیوں اور لازوال وابستگی کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔