عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان کل بروز منگل افغانستان کے تین روزہ دورے پر روانہ ہونگے جہاں وہ افغان صدر اشرف غنی کے ہمراہ امن کانفرنس میں شرکت کریں گے۔امن کانفرنس تین روز تک جاری رہے گی، اے این پی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین اور اے این پی بلوچستان کے صدر اصغر خان اچکزئی بھی ان کے ہمراہ ہونگے۔اپنے ایک بیان میں اسفندیار ولی خان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں مسائل کے حل کیلئے پاکستان کو کلیدی کردار ادا کرنا چاہئے، انہوں نے کہا کہ افغانستان کے مسئلے کا حل فوجی نہیں صرف مصالحت ہے، الزام تراشی اور بداعتمادی کے ماحول سے نکلنا بہت ضروری ہے۔
انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے مشترکہ دشمنوں نے دو طرفہ تعلقات کو نقصان پہنچایا، افغان بحران کی وجہ سے پاکستان سب سے زیادہ متاثر ہوا،اسفندیار ولی خان نے کہا کہ اے این پی ایک پر امن اور مستحکم افغانستان کی حمایت کرتی آئی ہے، پر امن اور خوشحال افغانستان خطے کے مفاد میں ہے،انہوں نے کہا کہ پائیدار امن کیلئے پاک افغانستان مقاصد مشترک ہیں۔