پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ حجاج کرام کی بددعائیں فرشتوں کی حکومت کو لے ڈوبیں گی ملک نازک دوراہے پر کھڑا ہے،حکومت غربت کی بجائے غریب کو ختم کرنے کے درپے ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے بحرین سوات میں جلسہ عام اور مختلف مقامات پر کارنر میٹنگز سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ حکومت نے غربت کے خاتمے کیلئے غریب کو ختم کرنے کا تہیہ کر رکھا ہے، ملک معاشی طورپر دیوالیہ ہو چکا ہے، ایک سال میں چالیس لاکھ خاندان خط غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہیں، انہوں نے کہا کہ متوسط طبقہ کسی بھی معاشرے میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے لیکن پاکستان میں متوسط طبقہ خاتمے کے قریب ہے، مڈل کلاس کے خاتمے سے ملک میں خونی انقلاب آئے گا جسے روکنا کسی کے بس میں نہیں ہوگا، ایمل ولی خان نے کہا کہ موجودہ حکمرانوں کے دور میں انصاف کا ترازو حکومتی ممبران کے حق میں جا رہا ہے، بنوں یونیورسٹی کے وی سی کو متنازعہ ویڈیو پر برطرف کرنے والے چیئرمین نیب کی ویڈیو پر خاموش رہے،انہوں نے کہا کہ بقول سلیکٹڈ وزیر اعظم ماضی کے حکمران چور تھے لیکن ان کے دور میں حجاڑھائی لاکھ کا تھا جبکہ آج فرشتوں کی حکومت نے حجاج کرام پر بیت اللہ کے دروازے تک بند کر دیئے ہیں،ایمل ولی خان نے کہا کہ سوات چار باغ میں ڈگری کالج کا قیام اے این پی کا کارنامہ ہے،ہماری حکومت نے پانچ سال کے دوران جتنے ترقیاتی کام کئے پی ٹی آئی ساٹھ سال میں نہیں کر سکتی،انہوں نے کہا کہ عوام کی خدمت کیلئے ہم اقتدار کے محتاج نہیں، اپوزیشن میں رہتے ہوئے خدمت کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے ایک سال میں جتنے قرضے لئے اس کی پاکستان کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی،ایمل ولی خان نے کہا کہ ہم نے اٹھارویں ترمیم کے ذریعے اپنے وسائل پر اختیار حاصل کیا،لیکن موجودہ کٹھ پتلیوں نے وہ تمام وسائل پھر سے پنجاب منتقل کر دیئے،نہوں نے کہا کہ قوم کا اربوں روپیہ الیکشن پر لٹانے کے بعد کٹھ پتلیوں کو اقتدار حوالے کر دیا گیا، سوات سے لائے گئے دو ایم پی ایز یونین کونسل کا الیکشن جیتنے کے قابل نہیں تھے لیکن انہیں زبردستی عوام پر مسلط کر دیا گیا، ایمل ولی خان نے کہا کہ سوات میں امن کی بحالی اور ترقیاتی کاموں کا سہرا اے این پی کے سر ہے،انہوں نے کہا کہ سوات ایکسپریس میں غریب عوام کو زمینوں سے محروم کیا جارہا ہے،سوات کے عوام کا مطالبہ ہے کہ اس ایکسپریس وے کو دریا کے کنارے تعمیر کیا جائے،تاکہ عوام کی زمینیں محفوظ ہوجائے،ایمل ولی خان نے یہ بھی کہا صوبائی حکومت محکمہ جنگلات کے ذریعے عوام کی قومی جائیدادوں پر قابض ہورہا ہے،اے این پی کسی صورت عوام پر صوبائی حکومت کا یہ جابرانہ فیصلہ مسلط نہیں ہونے دیگی،اگر صوبائی حکومت نے سوات کے عوام کے یہ دیریہنہ مطالبات نہیں مانے تو اے این پی ان مسائل کے حوالے سے سوات کے عوام کی طرف سے کیس دائر کریگی۔ایمل ولی خان نے کہا کہ ہم نے جانوں کے نذرانے پیش کر کے سوات میں پاکستان کا جھنڈا لہرایا، ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کے دکھ درد میں برابر کے شریک ہیں لیکن سلیکٹڈ وزیر اعظم کی اوچھی حرکتوں سے کشمیر کا معاملہ بگڑتا جا رہا ہے، انہوں نے کہا کہ عمران خان اپنے دورہ امریکہ میں کشمیر پر ڈیل اور اپنے حصے کی تفصیلات قوم کے سامنے رکھے۔