2019 اے این پی کی قربانیوں کی وجہ سے پاکستان میں امن قائم ہے،میاں افتخارحسین

اے این پی کی قربانیوں کی وجہ سے پاکستان میں امن قائم ہے،میاں افتخارحسین

اے این پی کی قربانیوں کی وجہ سے پاکستان میں امن قائم ہے،میاں افتخارحسین

لاہور( نمائندہ خصوصی) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اے این پی نے ہزار سے زائد کارکنان کے جانوں کا نذرانہ پیش کیا ہے تب جاکر ملک میں امن بحال ہوا ہے۔ اے این پی روز اول سے دہشت گردی کے خلاف سینہ سپر ہو کر کھڑی رہی اور دہشت گردی کے خلاف جنگ کو اپنا جنگ کہا تاکہ ملک دہشت گردی کے عفریت سے بچ سکیں۔ لاہور میں نامور وکیل اور انسانی حقوق کی علمبردار عاصمہ جہانگیر کی دوسری برسی کی موقع پر منعقدہ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے میاں افتخارحسین نے کہا کہ اے این پی دہشت گردوں کے خلاف لڑتی رہی اور سارا پاکستان تماشا دیکھ رہا تھا، ہم نے دہشت گردوں کا مقابلہ کیا اور اسی کی سزا آج تک بھگت رہے ہیں اور اے این پی ہی واحد سیاسی جماعت ہے جو پارٹی کے حیثیت سے ان دہشت گردوں کے خلاف میدان جنگ میں ڈٹ کر کھڑی رہی، پاکستان میں عوامی نیشنل پارٹی کے علاوہ کوئی بھی جماعت پارٹی کی حیثیت سے دہشت گردوں کے خلاف نہیں لڑا،انہوں نے کہا کہ ہم باچا خان کے عدم تشدد کے فلسفے کے پیروکار ہیں اس وجہ سے ہم نے پہلے طالبان کے ساتھ مذاکرات کیے،اُن کے ساتھ امن معاہدہ کیا،جب طالبان نے اُس معاہدے کی خلاف ورزی کی تو اے این پی کی صوبائی حکومت نے آپریشن کا فیصلہ کیا اور یہ آپریشن ملک کی تاریخ کا واحد آپریشن تھا جس میں عسکری قیادت کے پیچھے سیاسی قیادت کھڑی تھی اور یہی وجہ ہے کہ اُس آپریشن کے نتیجے میں وہ طالبان ہیرو سے زیرو ہوگئے جن کو پختون سوات میں اپنی بیویوں کے زیورات دیتے تھے۔میاں افتخار حسین نے ملک میں چھوٹے صوبوں کے استحصال پر بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نام کا فیڈریشن ہے، پاکستان میں چھوٹے صوبوں کے حقوق کے حوالے سے نہ آئین پر عمل درآمد ہوا اورنہ ہی صدق دل سے آج تک آئین میں موجود صوبائی خودمختاری کو مانا گیا۔پاکستان میں چھوٹے صوبے کسی ایسے حق کا ذکر نہیں کرسکتے جو چھوٹے صوبوں کو اٹھارویں آئینی ترمیم کے بعد ملا ہو،صوبہ خیبرپختونخوا کو اگر نام بھی ملا ہے تو وہ بہت جدوجہد اور جیلیں کاٹنے کے بعد ملا ہے۔انہوں نے عاصمہ جہانگیر اور پاکستان میں انسانی حقوق کے تحفظ کیلئے انکی جدوجہد کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ عاصمہ جہانگیر واحد خاتون تھیں جو ہر آمر کے سامنے ڈٹ کھڑی رہی اور اگر ان کے دشمن پر بھی ظلم ڈھانے کی کوشش کی گئی تو وہ اصولوں پر کھڑی رہیں۔ جمہوریت اور انسانی حقوق کیلئے ان کی کی گئی کوششوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائیگا

شیئر کریں