پشاور(پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردارحسین بابک نے کہا ہے کہ اے این پی پوری قوت کے ساتھ مرکزی صدر اسفندیارولی خان کی قیادت میں 31اکتوبر کو آزادی مارچ میں شرکت کرے گی، تمام اضلاع نے بھرپور انداز میں تیاریاں مکمل کرلی ہیں اور تمام اضلاع اس حوالے سے مکمل رابطے میں رہے۔ باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں صوبائی جنرل سیکرٹری نے کہا ہے کہ آزادی مارچ میں سینکڑوں سرخ پوش شرکت کے ذریعے دنیا کو پیغام دیں گے کہ یہ عوامی حکومت نہیں اور نہ ہی ان کے فیصلے عوام کے مفاد میں ہیں بلکہ موجودہ حکومت کے تمام فیصلے عوام کے مفادی کی نفی کررہی ہے۔عوامی نیشنل پارٹی آزادی مارچ میں مرکزی صدر اسفندیارولی خان کی قیادت میں شرکت کرے گی، ذیلی تنظیمیں تیاریوں کو حتمی شکل دے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ حکومت رکاوٹیں کھڑی کرنے کی بجائے پرامن احتجاج کیلئے راستہ ہموار کریں۔ ہر طبقہ فکر کے لوگ حکومت سے نالاں ہوچکے ہیں اور وقت آگیا ہے کہ وہ فی الفور اس حکومت کے خلاف ہونیوالے احتجاج کا حصہ بنے۔سردارحسین بابک نے کہا کہ یہی وقت ہے کہ ووٹ کے تقدس کی بحالی، آئین کی بالادستی، قانون کی عملداری، ملکی سلامتی اور عوام کے بہبود کیلئے تمام طبقوں کو نکلنا ہوگا۔ اے این پی کے تمام کارکنان سرخ ٹوپیاں پہن کر اپنے قائد کی سربراہی میں سرخ سمندر کی شکل میں اسلام آباد کا رُخ کریں گے۔ تمام اضلاع اپنی تیاریوں کو مزید موثر اور بھرپور بنانے کیلئے ایک دوسرے کے ساتھ رابطوں میں رہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں ثابت کرنا ہے کہ لاکھوں کی تعداد میں عوامی سمندر ایک مہذب اور پرامن احتجاج کی وجہ سے حکومت بوکھلاہٹ کا شکار نہیں ہونے دیں گے۔ انہیں یہ حقیقت تسلیم کرنی ہوگی کہ عوام کی حقیقی نمائندگی کون کرسکتا ہے اور کس طرح ہوتی ہے، سہاروں کی بنیاد پر سلیکٹڈ حکومت اور عوامی حکومت کے درمیان فرق عوام جان چکی ہے۔ سردارحسین بابک نے کہا کہ 31اکتوبر کو پوری دنیا جان جائیگی کہ سلیکٹڈ حکومت کے گھر جانے کا وقت آچکا ہے، اب مزید عوام کٹھ پتلی حکومت کو برداشت نہیں کرے گی۔