پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی چارسدہ کی ضلعی کابینہ منتخب ہو گئی ، شکیل بشیر خان عمر زئی صدر اور فارق خان شیخو جنرل سیکرٹری منتخب کر لئے گئے ، اس سلسلے میں ضلع کونسل چارسدہ کا انتخابی اجلاس زیر نگرانی صوبائی الیکشن کمیشن اور ضلعی الیکشن کمیٹی ظفر اللہ خان کے حجرے میں منعقد ہوا ، اجلاس میں مختلف عہدوں کیلئے درخواستٰں جمع کرائی گئیں جبکہ مقابل امیدوار نہ ہونے کی صورت میں تمام کابینہ باہمی اتفاق رائے سے بلا مقابلہ منتخب ہو گئی ،کابینہ کے دیگر منتخب ممبران میں بنارس راہی سیکرٹری اطلاعات،،فضل امین سیکرٹری مالیات، اجمل خان جائنٹ سیکرٹری،سلیمان خان سیکرٹری ثقافت، سلیم شاہ ڈپٹی جنرل سیکرٹری،ظہور شاہ ایڈیشنل جنرل سیکرٹرینائب صدر دوست محمد خان جبکہ نائب صدر دوم شاہ رضا باچہ شامل ہیں،صوبائی الیکشن کمیشن کے چیئرمین سردار حسین بابک نے نو منتخب کابینہ کو مبارکباد پیش کی اور کہاکہ جمہوریت کی بالا دستی کیلئے کوششیں کرنا اے این پی کا وطیرہ رہا ہے ، انہوں نے کہا کہ کوئی بھی دوسری جماعت اپنے کارکنوں کو اتنا با اختیار نہیں بنا سکتی ، اے این پی میں اپنے نمائندوں کے چناؤ کا اختیار کارکنوں کے پاس ،تمام دیگر جماعتیں اے این پی کی پالیسیوں کی تقلید کرتے ہوئے سلیکشن کی بجائے پارٹی کے اندر انتخابی عمل کے ذریعے نمائندے منتخب کرانے کو ترجیح دیں ، سردار حسین بابک نے کہا کہ گزشتہ الیکشن کے بعد سے ملک میں جمہوریت پر خطرات منڈلا رہے ہیں اور مسلط حکمرانوں نے ملک میں سول مارشل لاء نافذ کر رکھا ہے ، انہوں نے کہا کہ حکومت کیلئے شرم کا مقام ہے کہ اس نے سول ایوارڈ کی لسٹ میں ہارون بلور شہید کو نظر اندز کر دیا ،جس سے یہ اندازہ لگانا مشکل نہیں کہ اسے شہید کرنے والے کون تھے، انہوں نے کہا کہ اے این پی کو ہر طرح سے مٹانے کی کوششیں کی جاتی رہیں لیکن وقت کے فرعون ہمیشہ اپنی سازشوں میں ناکام رہے، انہوں نے کہا کہ آج وبے پر مسلط کٹھ پتلی حکمرانوں نے خیبر پختونخوا کو مالی طور پر دیوالیہ کر دیا ہے ، وزیر اعلیٰ وزیرستان میں قبائلیوں کو ورغلانے کی ناکام کوششیں کرتے رہے لیکن یہ نہیں بتایا کہ ان کی گھروں کو با عزت واپسی کب ممکن ہو گی،انہوں نے مزید کہا کہ عوامی مینڈیٹ سے محروم اور کندھوں پر سوار ہو کر اقتدار میں آنے والے عوامی مسائل کا ادراک نہیں کر سکتے ، خیبر پختونخوا کو تجربہ گاہ میں تبدیل کر دیا گیا ہے اور عوام دشمنی پر مبنی فیصلوں سے غریبوں کا جینا دشور ہو چکا ہے،انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت ملک کا 2800 ارب کا نقصان کر چکی ہے جبکہ موجودہ حکومت کے دور میں سی پیک کے خلاف سازشیں تیز ہو گئی ہیں۔ سردار بابک نے مزید کہا کہ نئے پاکستان کا لولی پاپ دینے والے مکمل طور پر ناکام ہو چکے ہیں۔ ملک چلانا پی ٹی آئی کے بس کی بات نہیں۔ حکومت سیاسی تلخیاں بڑھا کر حالات خراب کرنے پر تلی ہے۔