پشاور ( پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و ڈپٹی اپوزیشن لیڈر سردارحسین بابک نے کہا ہے کہ آئین کی بالادستی، قانون کی عملداری اور عوام کی حکمرانی تمام مسائل کا حل ہے،عدل و انصاف پر مبنی فیصلوں سے قومیں بنتی ہیں اور ملک ترقی کی راہ پر گامزن رہتا ہے۔ آئین توڑنے والوں نے ملک کو مسائل کے دلدل میں پھنسادیا ہے۔ مشرف کے سزا کے بعد انکے ساتھیوں کو عوامی عدالت میں سخت ترین سزا کی ضرورت ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سدابہار لوٹے ہر حکومت میں حکومتی مزے لوٹ رہے ہیں، تمام سیاسی جماعتوں اور عوام کو سدابہار لوٹوں کا بائیکاٹ کرنا چاہیے۔ ملک کے آئین کیساتھ کھیلنے والوں کو عوام معاف نہیں کرے گی۔ عدالتوں سے عدل و انصاف پر مبنی فیصلوں کی توقع رکھی جاتی ہے، ملک میں انصاف کا بول بالا ہوگا تو ملک دن دوگنی رات چگنی ترقی کرے گا۔عدالتی فیصلوں پر اثرانداز ہونے کی کوشش کو مہذب معاشرے میں اچھا نہیں سمجھا جاتا۔سردارحسین بابک کا کہنا تھا کہ عوام کی حقیقی حکمرانی یقینی بنانے کیلئے انصاف پر مبنی فیصلے اور سیاسی جماعتوں کو بھی اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ عوامی اختیار استعمال کرنیوالے مٹھی بھر عناصر نے عوام کی زندگی اجیرن بنادی ہے۔ آئین کی بالادستی کو یقینی بنانے کیلئے ملک کے تمام اداروں، سیاسی جماعتوں، میڈیا، سول سوسائٹی اور ہر مکتبہ فکر کے لوگوںکو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ انصاف پر مبنی فیصلے ملکی آئین کو کاغذ کا ٹکڑا سمجھنے والوں کی آنکھیں کھول دے گی۔انہوں نے کہا کہ ملک میں حقیقی جمہوریت کے نفاذ، پارلیمان اور آئینی بالادستی کیلئے اے این پی کے گراں قدر خدمات ہیں۔ عدالت کے انصاف پر مبنی فیصلے نے آئین کے ساتھ اور ضد میں کھڑے ہونے والوں کو بے نقاب کردیا ہے۔ ملک کے 22کروڑ عوام عوامی حکمرانی اور آئینی بالادستی میں ملک و قوم کی سلامتی اور ترقی دیکھ رہی ہے