پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ مہنگائی اور ٹیکسوں کی بھرمار نے تمام طبقہ فکر کے لوگوں کو سڑکوں پر نکلنے پر مجبور کر دیا ہے،حکومت نے معاشرے کے ہر فرد کو رلا دیا ہے،مہنگائی کے بوجھ، آئے روز اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافے اور لوڈ شیڈنگ سے چھوٹے کاروبار تباہ ہو گئے ہیں،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ چھوٹے کاروبار کی تباہی کا سہرا مسلط حکمرانوں کے سر ہے، اندرونی و بیرونی قرضوں کا اضافی بوجھ اور حکومتی بے حسی اور غیر ذمہ داری سے روز بروز عوام کے مسائل میں اضافہ ہو رہا ہے،انہوں نے کہا کہ حالات حکومتوں کے کنٹرول سے باہر ہیں،صوبے میں جاری منصوبوں کیلئے رقم موجود نہیں ہے اور نئے منصوبوں کے نام پر حکومتی ممبران کو ورغلایا گیاہے، انہوں نے کہا کہ صوبے کی آمدن میں خطرناک حد تک کمی آ چکی ہے، جبکہ مرکزی حکومت صوبے کو اس کا حصہ دینے سے کترا رہی ہے،سردار بابک نے کہا کہ وفاقی بجٹ میں صوبے کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا، انہوں نے کہا کہ صوبے کے عوام کو ریلیف دینے اور فلاح و بہبود کیلئے کوئی چیز موجود نہیں،جبکہ اس کے برعکس عوام سے مختلف حیلوں بہانوں کے ذریعے سرکاری بھتہ وصول کرنے کی نئی نئی ترکیبیں سوچی جا رہی ہیں۔