پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ترجمان صدر الدین مروت نے صوبائی حکومت کے ترجمان کی طرف سے ملی قائد اسفندیار ولی خان اور اے این پی کے خلاف ہرزہ سرائی کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر موصوف دوسروں پر تنقید کرنے سے قبل اپنی اوقات یاد رکھیں، خیبر پختونخوا کا بچہ بچہ ان کے کردار سے واقف ہے، اپنے ایک بیان میں شوکت یوسفزئی کے بیانات پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شوکت یوسفزئی اپنی قیمت بڑھانے اور نوکری پکی کرانے کی خاطر اپنے لیول سے کچھ زیادہ ہی بول رہا ہے،پختون قوم جانتی ہے کہ ان جیسے کرپٹ لوگوں کی کیا حیثیت ہے،جنات کے رحم وکرم پر وزیر اطلاعات بننے والے شوکت یوسفزئی کو اپنی ماضی یاد رکھنا چاہیے کہ وہ کس طرح پی ٹی آئی کی گزشتہ حکومت میں وزارت سے نکالے گئے تھے، صدرالدین مروت نے مزید کہا کہ در حقیقت حکمران اے این پی کے مظاہروں سے بوکھلاہٹ کا شکار ہیں اور انہیں اپنی سیاسی کشتی ڈوبتی دکھائی دے رہی ہے، انہوں نے کہا کہ 9جون کو مہنگائی کے خلاف احتجاج میں عوام نے موجودہ نا اہل حکومت پر عدم اعتماد کا اظہار کر دیا ہے،تاہم اے این پی کی طرف سے ملک میں جنگل کے قانون کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ جاری رہے گا اور 18جون کو یرغمال کئے گئے میڈیا کی آزادی جبکہ24جون کو نیب کی بے حسی کے خلاف میدان میں نکلیں گے، انہوں نے کہا کہ صوبے کے وسائل شیر مادر کی طرح لوٹ لیا گیا ہے اور اے این پی اس کا حساب لے گی،صدرالدین خان نے مزید کہا کہ وزیر مذکور اپنی زبان کو لگام دیں، اے این پی عدم تشدد پر یقین رکھنے والی جماعت ہے اور اگر ہرزہ سرائی کا سلسلہ بند نہ کیا گیا تو اینٹ کا جواب پتھر سے دینا ہم بھی جانتے ہیں۔