پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے سینئر رہنما حاجی غلام احمد بلور نے کہا ہے کہ سرتاج خان کا قتل پختونوں کے خلاف سازشوں کا حصہ ہے اور اے این پی کو دیوار سے لگانے کیلئے دہشت گردوں کو استعمال کیا جا رہا ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے این پی سٹی ڈسٹرکٹ کے صدر سرتاج خان کے بہیمانہ قتل کے خلاف صوبائی اسمبلی کے سامنے ہونے والے مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ اے این پی رہنماؤں کو روز اول سے دہشت گردی کے خلاف آواز اٹھانے پر روزانہ کی بنیاد پر قتل کیا جا رہا ہے،انہوں نے کہا کہ تخت اسلام آباد کی لڑائی نواز شریف،ثاقب نثار اور آرمی چیف کے درمیان تھی لیکن اس کی سزا پختونوں کی دی گئی،الیکشن مہم کے دوران ہارون بلور سمیت23لوگوں کو شہید کر دیا گیا، حاجی غلام احمد بلور نے کہا کہ اے این پی کے قائدین و کارکنوں کو پنجابیوں کے درمیان اقتدار کی رسہ کشی کا ایندھن بنایا گیا، اور اسفندیار ولی خان سمیت تمام پختون قوم پرستوں و سیاسی رہنماؤں کو اسمبلیوں سے باہر کر دیا گیا اور اقتدار کی جنگ میں نواز شریف کے بغیر تمام پنجابیوں کو اسمبلیوں میں بھیج دیا گیا، انہوں نے کہا کہ ہم اسٹیبلشمنٹ کے اشاروں پر نہیں چلتے اس لئے ہمیں اسمبلیوں سے باہر رکھا گیا، انہوں نے سرتاج خان کے جوش و جذبے کو خراج عقیدت پیش کیا اور کہا ہم قاتل سے قاتل کا پتہ کیسے پوچھیں، سرتاج خان اور اے این پی کے تمام شہداء کا خون حکمرانوں کے سر ہے اور حکومت کے اشاروں پر دہشت گرد اے این پی کو نشانہ بنا رہے ہیں۔