چارسدہ (پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ انگریز سامراج کے خلاف بھرپور جدو جہد کرنے والے اے این پی کے سینئر رہنما مرحوم حاجی محمد عدیل کی پارٹی اور قوم کیلئے خدمات رہتی دنیا تک یاد رکھی جائیں گی، مرحوم حاجی محمد عدیل کی تیسری برسی کے موقع پر اپنے پیغام میں ایمل ولی خان نے کہا کہ صوبے کو ملنے والے اختیارات اور شناخت کا سہرا حاجی محمد عدیل کے سر ہے، انہوں نے مرحوم کی قربانیوں اور ان کی شاندار خدمات پر خراج عقیدت پیش کیا اور کہا کہ اٹھارویں ترمیم اور صوبے کے نام و مختلف مقامات کو باچا خان کے نام سے منسوب کرنے کا کریڈٹ حاجی محمد عدیل کو جاتا ہے، اے این پی کے دور حکومت میں مرحوم کی کاوشوں سے صوبے کو بجلی کے بقایاجات کی مد میں 110ارب روپے ملے جبکہ آج صوبے کے وزیر اعلیٰ مرکز میں حکومت ہونے کے باوجود بھی وفاقی حکومت سے صوبے کے قرض پیسے بھی نہیں لے سکتا، انہوں نے کہا کہ حاجی محمد عدیل کو باچا خان بابا، ولی خان اور اسفندیار ولی خان کا اعتماد حاصل تھا اور یہ مقام انہیں اپنی قابلیت کی بنیاد پر ملا تھا،انہوں نے کہا کہ آج نوجوان نسل کو حاجی محمد عدیل کے نقش قدم پر چلنے کی ضرورت ہے اور انہی کی تقلید کرتے ہوئے آج کے نوجوان کو تنظیم اور پارٹی کی مضبوطی کیلئے جدوجہد کرنی ہوگی۔ایمل ولی خان نے مزید کہا کہ حاجی محمد عدیل کو ہم سے بچھڑے تین سال بیت گئے اور ان تین سالوں میں ملکی اور بین الاقوامی سیاست میں کئی نشیب وفراز آئے انہی مواقع پر حاجی عدیل جیسے ملکی آئین اور سیاست کے ماہر کی کمی بڑی شدت کے ساتھ محسوس کی گئی،مرحوم کو باچاخان بابا سے عقیدت اور استحصالی قوتوں کے خلاف عملی جدوجہد ورثے میں ملی تھی۔جب تک حیات رہے رواداری،شائستگی اور رکھ رکھاؤ کی سیاست کا عملی نمونہ رہے،ان جیسی شخصیات یقینًا”بڑی مشکل سے ہوتا ہے چمن میں دیداور پیدا“ حاجی محمد عدیل ان لوگوں میں سے تھے جنہوں نے اپنی محنت،لگن اور قابلیت سے اپنی قوم اور جماعت میں اپنے لیے ایک الگ نام اور مقام پیدا کیاہے،یہ ان کی شخصیت ہی تھی جنہوں نے خیبرپختونخوا کو اس نام کے ذریعے پہچان دلوانے ہی میں نہیں بلکہ بجلی منافع ہو یا دیگر امور،ہر،ہر موقع اور ہر،ہر ایشو پر صوبے کی جانب سے بھرپور طریقہ سے آواز اٹھائی اس لیے ان کی کمی ہر پل اور ہر گھڑی محسوس کی جائے گی