پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ اپوزیشن نے حکومت گرانے کا کوئی فیصلہ نہیں کیا ،موجودہ حکومت کو باہر سے کسی دشمن کی ضرورت نہیں ، عمران خان کی اپنی ٹیم، پالیسیاں اور فیصلے ان کو نقصان پہنچانے کیلئےء کافی ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے سخاکوٹ میں ایک نجی تقریب کے دوران میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ گزشتہ الیکشن میں جس طرح عوامی مینڈیٹ پر ڈاکہ ڈالا گیا اور انتخابی عمل کے دوران سازشیں کی گئیں وہ جمہوریت کیلئے نقصان دہ ہیں، اے این پی عوامی نمائندگی کا حق چھیننے کی ہر ممکن مخالفت کرتی رہے گی اور سازش کا عمل مزید برداشت نہیں کیا جائے گا، انہوں نے کہا کہ اے این پی جمہوری اقدار کے فروغ پر یقین رکھتی ہے اور اسی سلسلے میں پارٹی کے اندر تنظیم سازی کا عمل جاری ہے، انہوں نے کہا کہ اپریل کے آخر تک صوبوں کی تنظیمیں مکمل کر لی جائیں گی، ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ معیشت تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی ہے اور مسلط وزیر اعظم کی غلط پالیسیوں اور ناتجربہ کارٹیم نے ملک کو دیوالیہ ہونے کے قریب پہنچا دیا ہے، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ ڈالر کی140روپے سے زائد میں فروخت کے بعد بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافہ سمجھ سے بالاتر ہے اور دکھائی دے رہا ہے کہ موجودہ حکمران حاکمیت کا حق ادا کرنے کے موڈ میں نہیں بلکہ عوام کو زندہ درگور کرنے کے خواہاں ہیں،انہوں نے احتساب کے موجودہ عمل کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ موجودہ احتساب انتقام کی دوسری صورت ہے اور اسے صرف سیاسی مخالفین کے خلاف استعمال کرنے کیلئے دوہرا معیار اپنایا جا رہا ہے، انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے ہمارے ملک کے وزیر اعظم کا بیانیہ کسی دشمن ملک کے بیانیہ کی عکاسی کرتا ہے ،جسے وہ اپنے ملک کی سیاسی قیادت کے خلاف استعمال کر رہے ہیں۔