پشاور ( پ ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سرداحسین بابک نے کہا ہے کہ گومل زام ڈیم کی رائلٹی جنوبی وزیرستان کے عوام کا قانونی حق ہے اور حکومت کورائلٹی دینے میں کسی قسم کی تاخیری حربوں سے گریز کرنا چاہئے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے جنوبی وزیرستان میں ضلعی کابینہ کے انتخاب کے بعد وانا پریس کلب میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر اے این پی کے صوبائی الیکشن کمیشن کے ممبر خورشید خٹک سمیت دیگر قائدین بھی موجود تھے ، سردار حسین بابک نے کہا کہ قبائلی علاقوں کے عوام گزشتہ طویل جنگ سے بے حد متاثر ہوئے ہیں اور ان کی فوری آباد کاری کیلئے حکومت کو ہنگامی بنیادوں پر کام کا آغاز کرناچاہئے جبکہ تباہ حال انفراسٹرکچر کی تعمیر پر خصوصی توجہ دے کر بے گھر ہونے والوں کی فوری باعزت واپسی بھی یقینی بنائی جائے،انھوں نے کہاکہ گرداوی چیک پوسٹ پر انٹری کی زحمت سے جنوبی وزیرستان کے قبائلیوں کو نجات دلائی جائے، کیونکہ جنوبی وزیرستان آنے والے سارے پشتون پرامن لوگ ہیں،انھوں نے کہاکہ جنگوں سے سب ڈویژن وانا میں سینکڑوں لوگ معذور ہوچکے ہیں ،جن میں خواتین بھی شامل ہیں لہٰذاان کی بحالی اور نادراسے سپیشل کارڈ کے اجراء کے لئے حکومت اور غیرسرکاری تنظیمیں ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائیں،انھوں نے کہا کہ خاصہ دار اورلیویزفورس کو پولیس کی طرز پر مراعات دی جائیں، کیونکہ جنگ کے دوران انہوں نے بے تحاشا قربانیاں دی ہیں، ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں سے مائنز کی مکمل صفائی کی جائے تاکہ قبائلی خطہ قومی دھارے میں شامل ہونے کے بعد امن کا گہوارہ بن سکے اور قبائلی پشتونوں کی زندگیوں کا تحفظ کیا جا سکے ،انہوں نے کہاکہ عصر حاضر کے تقاضوں کے مطابق قبائلی علاقوں میں موبائل نیٹ ورک کا آغاز وقت کا اہم تقاضا ہے۔انھوں نے کہاکہ اگر حکومت بھارت کے ساتھ تجارت اور بارڈر کھولنے کے معاہدے کرسکتی ہے،توپھر دوست ملک افغانستان کے ساتھ تجارتی معاہدے میں کیا رکاوٹ درپیش ہے، انھوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع کے اہم تجارتی راستوں پر افغانستان کیساتھ تجارت کرنے میں حائل تمام رکاوٹیں دور کی جائیں تاکہ قبائلی اضلاع سے بے روزگاری کی عفریت کو ختم کیا جاسکے۔انھوں مزید کہاکہ وزیراعظم عمران خان ضم شدہ قبائلی اضلاع کے لئے اپنے وعدے کے مطابق این ایف سی ایوارڈ میں تین فیصد حصہ مختص کریں، تاکہ قبائلی علاقوں میں ترقی کے ثمرات سے یہاں کے باسی بہرہ مند ہوسکیں