پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صدر حاجی غلام احمد بلور نے کہا ہے کہ اٹھارویں ترمیم بارے عمران خان کے بیان سے بالآخر ’’بلی تھیلے سے باہر آ گئی‘‘ وزیر اعظم کے ارد گرد لوگوں کو سوچنا ہو گا کہ اٹھارویں ترمیم کے خاتمے کی بات کر کے عمران نے خود کو چھوٹے صوبوں اور ملک کا غدار ثابت کر دیا ہے،اپنی رہائشگاہ پر پارٹی کے مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سازشیں کرنے والوں کو یہ علم ہونا چاہئے کہ اٹھارویں ترمیم تمام سیاسی جماعتوں کی مشترکہ کاوشوں کا ثمر تھا لیکن اس ترمیم کے باوجود بھی ہمیں وہ کچھ نہیں ملا جو ہمیں انگریز نے دیا تھابلکہ اس سے زیادہ ہمیں اس انگریز نے دیا تھا جس کے ہم غلام تھے ، انہوں نے کہا کہ دور غلامی میں تعلیم ،صحت،بجلی اور تمام معدنیات پر ہمارے صوبے کا حق تھا لیکن ون یونٹ بنانے کے بعد تمام سہولیات ہم سے چھین لی گئیں ، حاجی غلام احمد بلور نے مزید کہا کہ صوبوں کی بحالی کے بعد ہمیں اپنے حقوق واپس نہ مل سکے ،انہوں نے کہا کہ عمران جھوٹا پختون ہے اور در حقیقت یہ پختونوں کا دشمن ہے جس صوبے کے بغیر وہ وزیر اعظم نہیں بن سکتے تھے اسی صوبے کی پیٹھ میں چھرا گھونپنے کی کوششوں میں مصروف ہے، انہوں نے کہا کہ آسڑیلیا جیسے ترقی یافتہ ملک کا آئین دیکھا جائے تو وہاں تمام حقوق ریاستوں کے پاس ہیں اگر بیرونی دنیا کے ملک چھوٹی ریاستوں کو حقوق دینے سے ترقی کر سکتے ہیں تو ہمارا ملک کیوں نہیں کر سکتا،حاجی غلام احمد بلور نے کہا کہ وزیراعظم کے چہرے سے نقاب اتر چکا ہے اور ملک و صوبوں سے غداری کا روپ سب کے سامنے ہے،اب یہ وضاحت ہونی چاہئے کہ اٹھارویں ترمیم کے خلاف بات کر کے عمران کس کی زبان بول رہا ہے، انہوں نے واضح کیا کہ اٹھارویں آئینی ترمیم عوامی نیشنل پارٹی کی سابق حکومت کا کارنامہ ہے اور اس کارنامے کے بل بوتے پر چھوٹے صوبوں میں احساس محرومی ختم ہوا،
انہوں نے وفاقی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کو جن قوتوں کی جانب سے اٹھارویں آئینی ترمیم میں چھیڑ چھاڑ کا جو ٹاسک دیا گیا ہے وہ آسان نہیں ہو گا کیونکہ اٹھارویں آئینی ترمیم کے ساتھ نہ صرف پختون قوم کا مستقبل جڑا ہوا ہے بلکہ ملک میں زیادتی کا شکار ہونے والی دیگر قومیتیں بھی متاثر ہونگی۔