پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے پاک بھارت کشیدہ صورتحال میں ثالثی کی پیشکش کرتے ہوئے کہا ہے کہ اے این پی کو اگر اپنا کردار ادا کرنے کیلئے کہا گیا تو ہم دونوں ممالک کے درمیان ثالث کا کردار ادا کرنے کو تیار ہیں، اے این پی ہمیشہ سے امن کی خواہاں رہی ہے اور ہم جنگ کے حق میں نہیں ، اپنے ویڈیو پیغام میں انہوں نے کہا کہ ہم باچا خان کے فلسفہ عدم تشدد کے پیروکار ہیں، اگر ایسے حالات پیدا ہوتے ہیں تو اس کے تدارک کیلئے اے این پی خود بھی کوششیں کرے گی اور تمام فریقین کو بھی پُرامن رہنے کی تلقین کرے گی، انہوں نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان موجودہ صورتحال باعث تشویش ہے اور بالخصوص ان قوتوں کیلئے انتہائی تشویش کی بات ہے جو عدم تشدد کی بات کرتی ہیں اور مسائل کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کے حق میں ہیں ، اسفندیار ولی خان نے کہا کہ دونوں ممالک کی حکومتیں سوچ سمجھ کر قدم اٹھائیں ، پاکستان کئی بار مذاکرات کی پیشکش بھی کر چکا ہے جسے انڈیا نجانے کن مجبوریوں کے تحت تسلیم کرنے سے گریزاں ہے،اسفندیار ولی خان نے مزید کہا کہ جنگ کسی مسئلے کا حل نہیں ،دنیا بھر میں تمام تنازعات صرف مذاکرات کی میز پر ہی حل ہو سکتے ہیں اور تشدد سے نفرتیں کم ہونے کی بجائے مزید بڑھتی جائیں گی،انہوں نے کہا کہ دونوں ملک ضبط و تحمل کا مظاہرہ کریں اور اپنے تنازعات کا حل تلاش کرنے کیلئے گفت و شنید کی طرف آئیں ،موجودہ حالات میں اے این پی وہی کردار ادا کرے گی جو دوسری جنگ عظیم میں باچا خان نے انگریزوں اور کانگریس کے درمیان ادا کیا تھا،انہوں نے کہا کہ خطہ کو جنگ سے بڑھ کر امن کی ضرورت ہے اور موجودہ صورتحال میں قومی یکجہتی و ملی اتحاد وقت کی اہم ضرورت ہے۔